Delhi دہلی

میرا سب سے بڑا اثاثہ میری ایمانداری ہے، بی جے پی جھوٹے مقدمات سے میری ایمانداری کو ٹھیس پہنچانا چاہتی ہے: اروند کیجریوال

میں نے ہمیشہ ملک کے لیے جنگ لڑی ہے، میری ہر سانس، میرے خون کا ہر قطرہ ملک کے لیے وقف ہے


نئی دہلی(پی ایم ڈبلیو نیوز) وزیر اعلی اروند کیجریوال نے بدھ کو ای ڈی کے سمن کے پیچھے بی جے پی کی چھپی سازش پر ایک بڑا انکشاف کیا ہے۔وزیراعلیٰ نے کہا کہ میرا سب سے بڑا اثاثہ اور طاقت میری ایمانداری ہے۔ میں نے ہمیشہ ملک کے لیے جنگ لڑی ہے۔ میری ہر سانس، خون کا ہر قطرہ وطن کے لیے وقف ہے۔ یہ لوگ جھوٹے الزامات لگا رہے ہیں۔اور جعلی سمن بھیج کر وہ مجھے بدنام کرنا اور میری سالمیت کو ٹھیس پہنچانا چاہتے ہیں۔ انہوں نے اس فرضی کیس میں عام آدمی پارٹی کے کئی لیڈروں کو جیل میں بند کر رکھا ہے اور اب مجھے گرفتار کرنا چاہتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ میں نے سمن کے حوالے سے ای ڈی سے تفصیلی جواب طلب کیا ہے، لیکن کوئی جواب نہیں ملا۔ اس کا مطلب ہے کہ وہ ان کا یہ بھی ماننا ہے کہ ان کا سمن غیر قانونی ہے۔ سچ تو یہ ہے کہ بی جے پی کا مقصد صرف پوچھ گچھ کرنا نہیں ہے، بلکہ وہ مجھے گرفتار کر کے لوک سبھا انتخابات میں مہم چلانے سے روکنا چاہتے ہیں۔ میں ان کے خلاف دل سے لڑ رہا ہوں، اس لڑائی میں مجھے اپنے ہم وطنوں کی حمایت کی ضرورت ہے۔دہلی کے وزیر اعلی اروند کیجریوال نے جمعرات کو ایک ڈیجیٹل پریس کانفرنس کی اور ای ڈی کے ذریعہ بار بار بھیجے جانے والے سمن کے بارے میں ہم وطنوں کے سامنے اپنا رخ پیش کیا۔ انہوں نے کہا کہ پچھلے دو سالوں میں آپ سب نے نام نہاد شراب گھوٹالہ کا لفظ کئی بار سنا ہوگا۔ پچھلے دو سالوں میں بی جے پی کی تمام ایجنسیوں نے کئی بار چھاپے مارے ہیں۔لوگوں کو گرفتار کیا گیا ہے، لیکن اب تک ایک بھی رقم کہیں سے نہیں ملی ہے۔ اگر واقعی کرپشن ہوئی ہے تو کروڑوں روپے کہاں گئے؟کیا سارا پیسہ ہوا میں غائب ہو گیا؟ سچ تو یہ ہے کہ کسی قسم کی کرپشن نہیں ہوئی۔ کرپشن ہوتی تو پیسہ بھی مل جاتا۔ انہوں نے اب بھی عام آدمی پارٹی کے کئی لیڈروں کو ایسے فرضی کیسوں میں جیل میں بند کر رکھا ہے۔ کسی کے خلاف کوئی ثبوت نہیں اور کچھ ثابت نہیں ہو رہا ہے ۔ لیکن ان کی غنڈہ گردی کھلے عام جاری ہے، یہ کسی کو پکڑ کر جیل میں ڈال دیتے ہیں۔وزیراعلیٰ اروند کیجریوال نے کہا کہ اب بی جے پی مجھے گرفتار کرنا چاہتی ہے۔ میرا سب سے بڑا اثاثہ اور طاقت میری ایمانداری ہے۔ جھوٹے الزامات لگا کر اور جعلی سمن بھیج کر وہ مجھے بدنام کرنا اور میری سالمیت کو ٹھیس پہنچانا چاہتے ہیں۔ انہوں نے مجھے سمن بھیجا ہے۔ میرے وکلاء نے مجھے بتایا کہ یہ سمن غیر قانونی ہیں۔ میں نے انہیں تفصیل سے لکھا ہے کہ یہ سمن غیر قانونی کیوں ہیں۔ اس میں میں نے بتایا ہے کہ ای ڈی کے سمن کیسے غیر قانونی ہیں۔ لیکن انہوں نے میری ایک بات کا بھی جواب نہیں دیا۔ اس کا مطلب ہے کہ ان کے پاس میری باتوں کا کوئی جواب نہیں ہے۔ اس کا مطلب یہ ہے کہ وہ یہ بھی مانتے ہیں کہ ان کانوٹس غیر قانونی ہے۔ کیا مجھے غیر قانونی عرضی کی تعمیل کرنی چاہیے؟ اگر قانونی طور پر درست سمن آتا ہے تو میں مکمل تعاون کروں گا۔ وزیراعلیٰ اروند کیجریوال نے کہا کہ بی جے پی کا مقصد تحقیقات کرنا نہیں ہے، بی جے پی کا مقصد مجھے لوک سبھا انتخابات میں مہم سے روکنا ہے۔ انہوں نے لوک سبھا انتخابات سے عین قبل مجھے کیوں طلب کیا ہے؟جبکہ یہ تحقیقات دو سال سے جاری ہیں۔ اب مجھے لوک سبھا انتخابات سے ٹھیک پہلے کیوں بلایا جا رہا ہے، مجھے پہلے کیوں نہیں بلایا گیا؟ سی بی آئی نے مجھے آٹھ مہینے پہلے بلایا تھا۔ میں سی بی آئی کے پاس گیا اور ان کے تمام جوابات دیئے۔ لیکن اب یہ لوگ مجھے لوک سبھا انتخابات سے صرف دو ماہ قبل فون کر رہے ہیں۔ توبی جے پی کا مقصد کوئی پوچھ گچھ کرنا نہیں ہے، بلکہ ان کا مقصد اروند کیجریوال کو پوچھ گچھ کے بہانے بلا کر گرفتار کرنا ہے، تاکہ میں لوک سبھا انتخابات میں مہم نہ چلا سکوں۔ وزیراعلیٰ اروند کیجریوال نے مزید کہا کہ آج بی جے پی بدعنوانوں کو نہیں پکڑ رہی ہے بلکہ ای ڈی اور سی بی آئی کا استعمال کرکے دیگر پارٹیوں کے لیڈروں کو توڑ کر بی جے پی میں شامل کرنے کا کام کھلے عام کیا جارہا ہے۔ ایک دو نہیں بلکہ ایسی کئی مثالیں ہیں، جہاں کسی پارٹی لیڈر کے خلاف ای ڈی یا سی بی آئی کیس درج کیے گئے ہیں۔جیسے ہی ان لیڈروں نے بی جے پی میں شمولیت اختیار کی، ان کے تمام مقدمات بند یا روک دیے گئے۔ جو بھی ان کی پارٹی میں شامل ہوتا ہے، ان کے سارے کیس نمٹائے جاتے ہیں۔ جبکہ جو ان کی پارٹی میں نہیں جاتا وہ جیل جاتا ہے۔ آج منیش سسودیا، سنجے سنگھ اور وجے نائر اس لیے جیل میں نہیں ہیں کہ انھوں نے بدعنوانی کی ہے، بلکہ اس لیے کہ انھوں نے بی جے پی میں شامل ہونے سے انکار کر دیا ہے۔اس پر زور دیتے ہوئے وزیراعلیٰ اروند کیجریوال نے کہا کہ آج ہم بی جے پی سے مقابلہ کرنے کے قابل ہیں کیونکہ ہم نے کوئی بدعنوانی نہیں کی ہے۔ اگر ہم نے معمولی سا بھی غلط کام کیا ہوتا تو آج ہم دوسرے بدعنوان لیڈروں کی طرح بی جے پی میں شامل ہو چکے ہوتے۔ اس طرح ملک کے ایماندار لیڈروں کو جیلوں میں ڈال کر اورکرپٹ لوگوں کو پارٹی میں شامل کرنے سے ملک آگے نہیں بڑھ سکتا۔ کیا ہو رہا ہے؟ جو کچھ بھی ہو رہا ہے وہ بہت خطرناک ہورہا ہے۔ یہ ہماری جمہوریت کے لیے بہت غلط ہے، اسے روکنا ہوگا۔وزیراعلیٰ اروند کیجریوال نے آخر میں کہا کہ میں نے ہمیشہ ملک کے لیے جنگ لڑی ہے۔ میرا جسم، دماغ اور مال ملک کے لیے ہے۔ میری ہر سانس ملک کے لیے ہے۔ میرے خون کا ایک ایک قطرہ ملک کے لیے ہے۔ میرے جسم کا ہر ریشہ ملک کے لیے وقف ہے۔ ہم نے مل کر ملک کو بچانا ہے۔ میں ان کے خلاف دل و جان سے لڑ رہا ہوں اور اس میں عوام کی حمایت حاصل ہے اور اس میں عوام کا ساتھ چاہیے۔

Related posts

ای ڈی کے ذریعہ سپریم کورٹ کے حکم کی خلاف ورزی

Paigam Madre Watan

پسماندہ طبقات کی ترقی کیلئے ذات پات کی مردم شماری کی ضرور ت ہے۔ ایس ڈی پی آئی

Paigam Madre Watan

کیجریوال حکومت نے دو کورونا جنگجوؤں کے خاندانوں کو ایک ایک کروڑ روپے کا اعزازیہ دیا، وزیر خوراک اور سپلائی عمران حسین نے چیک حوالے کیے

Paigam Madre Watan

Leave a Comment

türkiye nin en iyi reklam ajansları türkiye nin en iyi ajansları istanbul un en iyi reklam ajansları türkiye nin en ünlü reklam ajansları türkiyenin en büyük reklam ajansları istanbul daki reklam ajansları türkiye nin en büyük reklam ajansları türkiye reklam ajansları en büyük ajanslar