Delhi دہلی

مرکز کے سرکاری اسپتالوں میں بدعنوانی عروج پر، رشوت دیے بغیر بستر نہیں ملتے: دلیپ پانڈے

دلالوں کو پیسہ دیے بنا بستر مانگتے ہیں تو وہ مریضوں کو واپس اسپتال بھیج دیتے ہیں، جب کہ ادائیگی کرنے کے بعد انہیں فوراً بستر مل جاتا ہے


عام آدمی پارٹی بی جے پی کی مرکزی حکومت سے جاننا چاہتی ہے کہ وہ اپنے زیر کنٹرول اسپتالوں میں پھیلی بدعنوانی پر کیا کارروائی کر رہی ہے


نئی دہلی(پی ایم ڈبلیو نیوز) دہلی میں واقع مرکزی حکومت کے تحت آنے والے اسپتالوں میں مریضوں کو پیسے دے کر بستر دستیاب کرائے جا رہے ہیں۔ اگر مریض دلالوں کو پیسے نہیں دیتا تو اسپتال انتظامیہ اسے یہ کہہ کر واپس بھیج دیتی ہے کہ بستر نہیں ہیں۔ جمعرات کو عام آدمی پارٹی کے سینئر لیڈر اور ایم ایل اے دلیپ پانڈیہیڈ کوارٹر میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے یہ بڑا انکشاف کیا۔ اس دوران انہوں نے کچھ میڈیا میں شائع ہونے والی خبروں کا بھی حوالہ دیا اور کہا کہ مرکزی حکومت کے زیر انتظام اسپتالوں میں بدعنوانی اپنے عروج پر ہے۔ مریضوں کو بغیر معاوضے کے بستر نہیں مل رہے ہیں۔ جبکہ پیسے دینے پر ہی بستر مل رہا ہے۔ بی جے پی سے سوال کیا کہ وزیر اعظم، مرکزی وزیر داخلہ اور وزیر صحت ان اسپتالوں میں پھیلی بدعنوانی پر کیوں خاموش ہیں اور دلالوں پر لگام لگانے کے لیے کیا کارروائی کی جا رہی ہے؟ عام آدمی پارٹی کے سینئر لیڈر اور ایم ایل اے دلیپ پانڈے نے کہا کہ دہلی میں ایم سی ڈی، دہلی حکومت اور مرکزی حکومت کے اسپتال مرکزی حکومت کے تحت ایمس، صفدرجنگ جیسے اسپتال ہیں۔ ان اسپتالوں میں جو کچھ بھی ہو رہا ہے وہ کسی آئینی ادارے کی جانچ پڑتال میں نہیں ہے۔ ایم ایل اے دلیپ پانڈے نے میڈیا رپورٹس کا حوالہ دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ مریضوں کو یہ کہہ کر واپس کر دیا جاتا ہے کہ صفدر جنگ اسپتال میں بستر نہیں ہیں۔ اسپتال انتظامیہ اور دلالوں کا ایسا گٹھ جوڑ ہے کہ ہزاروں روپے خرچ کریں تو آسانی سے بستر مل جائیں گے۔ جبکہ دلالوں کو پیسے دیے بغیر بستر مانگنے پر بتایا جاتا ہے کہ بستر خالی نہیں ہیں۔ ایم ایل اے دلیپ پانڈے نے کہا کہ صفدر جنگ اسپتال مرکزی وزیر صحت کے تحت آتا ہے۔ مرکزی وزیر صحت کی ناک کے نیچے صفدر جنگ اسپتال میں دلالی پنپ رہی ہے۔ یہ ایک مجرمانہ فعل ہے۔ صفدر جنگ اسپتال کے انتظامات کو بہتر بنانا مرکزی وزیر داخلہ امت شاہ کی ذمہ داری ہے۔ وزارت صحت ڈاکٹر منسکھ منڈاویہ کے پاس ہے۔ دہلی قومی دارالحکومت علاقہ ہے۔ اس لیے وزیر اعظم کو بھی اس کا علم ہوگا۔وزیر اعظم، مرکزی وزیر داخلہ اور وزیر صحت سے سوال کرتے ہوئے ایم ایل اے دلیپ پانڈے نے کہا کہ دہلی میں مرکزی حکومت کے ماتحت اسپتال مریضوں کو بستر فراہم کرنے کے قابل نہیں ہیں، جب کہ دلالوں کو پیسے کے عوض وہی بستر مل رہے ہیں۔ اس کرپشن میں اسپتال انتظامیہ بھی ملوث ہے، اس کے باوجود وزیراعظم آپ خاموش کیوں ہیں؟ وزیر اعظم، مرکزی وزیر داخلہ اور وزیر صحت کو دہلی کے لوگوں کو بتانا چاہئے کہ دلالوں کے ذریعہ بستر فراہم کرنے کی میڈیا رپورٹس کو پڑھ کر وہ پریشان ہوئے یا نہیں۔ دلیپ پانڈے نے دو دن پہلے کے ایک واقعہ کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ ایک لڑکی ایمس اور صفدر جنگ اسپتال میں دھکے کھاتی رہی، لیکن ۔بستر نہیں ملا۔ اس لڑکی کا علاج دہلی حکومت کے کینسر انسٹی ٹیوٹ میں ہوا۔ کینسر انسٹی ٹیوٹ کے ذریعہ ریفر کرنے پر لڑکی کے اہل خانہ اسے ایمس اور صفدر جنگ اسپتال لے گئے، لیکن کہیں بھی علاج نہیں ہوا۔ایم ایل اے دلیپ پانڈے نے کہا کہ پہلے آپ دلالوں پر پیسہ خرچ کرتے ہیں، اگر دلال اس رقم کو اوپر منتقل کریں گے تو آپ کو آسانی سے بستر مل جائے گا، جب کہ اگر آپ براہ راست جائیں گے تو آپ کو بستر نہیں ملے گا۔ وزیر اعظم، مرکزی وزیر داخلہ اور مرکزی وزیر صحت اس بدعنوانی پر کیوں خاموش ہیں؟جبکہ یہ ایک فوجداری مقدمہ ہے۔ عام آدمی پارٹی، دہلی کے لوگوں کی طرف سے، وزیر اعظم، مرکزی وزیر داخلہ اور وزیر صحت سے جاننا چاہتی ہے کہ وہ مرکزی حکومت کے تحت اسپتالوں میں پھیلی بدعنوانی کے خلاف کیا کارروائی کر رہے ہیں۔ کیا آپ کی خاموشی ان دلالوں کو نواز نہیں رہی؟ اس سے ان کے حوصلے بلند نہیں ہو رہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ دہلی اور ملک کے لوگ بی جے پی سے جاننا چاہتے ہیں کہ وہ ان دلالوں کے خلاف کیا کارروائی کر رہی ہے تاکہ مستقبل میں جب مریض ان اسپتالوں میں جائیں تو انہیں یقین دلایا جا سکے کہ انہیں بغیر پیسے دیئے ایک بستر ملے گا۔ بی جے پی کی مرکزی حکومت نے تمام آئینی اداروں کو دہلی حکومت کے وزراء کو سونپ دیا ہے۔اگر ان وسائل کو پیچھے چھوڑنے کی بجائے اپنے زیر تسلط نظام کو بہتر بنانے کے لیے استعمال کیا جاتا تو آج ان اسپتالوں میں دلالی پنپتی نہ ہوتی۔ بی جے پی کو جلد از جلد بیدار ہونا چاہیے۔ اگر بی جے پی نے احتیاط نہیں کیا تو دہلی مرکزی حکومت کے خلاف کارروائی کرے گی جو جھوٹے الزامات لگا کر دہلی حکومت کو بدنام کر رہی ہے۔ دہلی کی عوام جلد ہی تحریک شروع کرے گی۔

 

Related posts

ایس سی؍ ایس ٹی ؍ او بی سی بہبود کے وزیر نے ذات کے سرٹیفکیٹ کے اجراء کو تیز کرنے کے لیے ترقی پسند اقدامات کا اعلان کیا: راج کمار آنند

Paigam Madre Watan

عید سعید کی قوم کو مبارک باد

Paigam Madre Watan

بڑھتی ہوئی آلودگی کے مسئلے کے پیش نظر، سی اے کیو ایم کے حکم پر دہلی میں گریپ کی پابندی کے تیسرے مرحلے کو نافذ کرنے کا فیصلہ کیا گیا

Paigam Madre Watan

Leave a Comment

türkiye nin en iyi reklam ajansları türkiye nin en iyi ajansları istanbul un en iyi reklam ajansları türkiye nin en ünlü reklam ajansları türkiyenin en büyük reklam ajansları istanbul daki reklam ajansları türkiye nin en büyük reklam ajansları türkiye reklam ajansları en büyük ajanslar