Delhi دہلی

بلیمارن کے لوگوں نے "میں بھی کیجریوال” عوامی ڈائیلاگ مہم میں کہا، "اگر وزیر اعلی اروند کیجریوال کو گرفتار کیا گیا تو ہم جیل کے باہر احتجاج کریں گے”: عمران حسین

نئی دہلی(پی ایم ڈبلیو نیوز)دہلی حکومت کے کابینہ وزیر اور بلیمارن کے ایم ایل اے عمران حسین کی قیادت میں عام آدمی پارٹی کی ‘میں بھی کیجریوال’ مہم کے تحت اسمبلی حلقہ کے لال کوا اور قصاب پورہ میں ایک عوامی ڈائیلاگ کا انعقاد کیا گیا۔ جن سمواد میں لوگوں کی بڑی بھیڑ جمع ہوئی اور سب نے وزیر اعلی اروند کیجریوال کی تعریف کی۔ان کے حق میں اپنی حمایت دی۔ عوامی مکالمے کے دوران بلیماران کے ایم سی ڈی کونسلر محمد۔ صادق اور قصاب پورہ سے کونسلر مسز شمیم بانو بھی موجود تھیں۔بلیمارن اسمبلی کے لال کوا میں عوامی مکالمے کے دوران خواتین کی ایک بڑی تعداد بھی موجود تھیں، جن کا کہنا تھا کہ اس ملک میں اروند کیجریوال حکومت نے بچوں کے مستقبل کے لیے کام کیا ہے اور تعلیم کو اولین ترجیح دی ہے۔ عوامی مکالمے کے دوران کئی خواتین نے بھی اپنے خیالات کا اظہار کیا۔ سب نے اتفاق کیا کہ دہلی ہندوستان میں تعلیم کی بہتری کا کام قابل تعریف ہے۔ آج بلیمارن اسمبلی تعلیم کے میدان میں نئے ریکارڈ قائم کر رہی ہے۔بلیمارن اسمبلی کی خواتین نے کہا کہ اروند کیجریوال نے ہمارے بچوں کا مستقبل سنوارا ہے، اگر اروند کیجریوال جیل گئے تو ہم سب جیل کے باہر احتجاج کریں گے اور ہم بھی ان کے ساتھ جیل جائیں گے اور اروند کیجریوال کو جو پیار مل رہا ہے۔ جیل بھی چھوٹی ہو جائے گی۔ بلیماران میں آج کی حکومت نے خراب حالت کو آج اسکولوں کو جدید اسکول بنا دیا گیا ہے جہاں پرائیویٹ اسکولوں سے بہتر تعلیم دی جاتی ہے۔ اروند کیجریوال نے تعلیم پر سب سے زیادہ محنت کی ہے، جو ملک کی بنیاد ہے۔ علاقے کی خواتین کا کہنا تھا کہ بسوں میں مفت سفر سے ہم اپنے روزمرہ کے کام بھی کر پا رہے ہیں جس سے ہمارے گھروں کی معاشی زندگی میں مدد ملی ہے اور صورتحال بھی مضبوط ہو رہی ہے۔ خواتین نے کہا کہ پہلے ہمیں روزانہ پانی کی پریشانی کا سامنا کرنا پڑتا تھا لیکن اب اروند کیجریوال کی حکومت میں پانی کا کوئی مسئلہ نہیں ہے۔بلیمارن اسمبلی کے قصاب پورہ میں بھی ایک عوامی ڈائیلاگ کا انعقاد کیا گیا، جہاں سخت سردی کے باوجود یہاں لوگوں کی بڑی بھیڑ جمع ہوئی اور سب نے وزیر اعلی اروند کیجریوال کے حق میں اپنی حمایت دی۔ عوامی مکالمے کے دوران لوگوں نے کہا کہ ملک کے مفاد میں مہاتما گاندھی کو بھی جیل جانا پڑا، اگر اروند کیجریوال ہوتے۔اگر ہم سب کو اچھی تعلیم فراہم کرنے کے بڑے مشن پر ہیں تو اس طرح کے چھوٹے مسائل ہمارا کچھ نہیں بگاڑ سکتے۔ اروند کیجریوال دہلی کے لوگوں کے دلوں میں رہتے ہیں، انہیں استعفیٰ نہیں دینا چاہیے۔ان جلسوں میں موجود لوگوں نے ایک آواز میں کہا کہ وہ اپنے وزیر اعلی اروند کیجریوال کے ساتھ کھڑے ہیں۔ عوامی خطاب میں عمران حسین نے عوام سے سوال کیا کہ اگر کیجریوال گرفتار ہوتے ہیں تو استعفیٰ دیں یا جیل سے حکومت چلائیں۔ لوگوں نے ایک آواز میں کہا کہ وزیر اعلی کو ایک سازش کے تحت گرفتار کیا جارہا ہے ۔انہیں گرفتار کرنے کی سازش ہو رہی ہے لیکن کچھ بھی ہو جائے استعفیٰ نہیں دینا چاہیے۔ لوگوں نے کہا کہ ہم نے اروند کیجریوال کو اپنا وزیر اعلیٰ منتخب کیا ہے، چاہے وہ استعفیٰ دے دیں، چاہے انہیں جیل سے حکومت چلانی پڑے، ہم اپنے وزیر اعلیٰ کے ساتھ کھڑے ہیں۔ عمران حسین نے کہا کہ ایک کے بعد ایک عام آدمی پارٹی لیڈروں کو جیل بھیجا جا رہا ہے اور اب پچھلے کئی مہینوں سے دہلی کے وزیر اعلی اروند کیجریوال کو گرفتار کرنے کی سازش رچی جا رہی ہے، جھوٹے الزامات لگائے جا رہے ہیں۔جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے وزیر عمران حسین نے کہا کہ اس ملک میں اگر کوئی لیڈر تعلیم اور صحت کی ضمانت دے سکتا ہے تو وہ صرف اروند کیجریوال ہے۔کیجریوال جی کی قیادت میں دہلی حکومت نے پچھلے سات آٹھ سالوں میں ترقی کے نئے ریکارڈ قائم کیے ہیں۔ دہلی میں اروند کیجریوال حکومت نے دہلی والوں کو مفت بجلی، صاف پانی، علاج، تعلیم، خواتین کے لیے بس سفر اور یاترا کی سہولیات فراہم کیں اور اروند کیجریوال دہلی والوں کے دلوں میں بستے ہیں۔ اس لیے انہیں استعفیٰ نہیں دینا چاہیے اور جیل میں رہ کر بھی حکومت چلانی چاہیے۔

Related posts

پٹیل نگر علاقے میں ترقییاتی کام جاری ہیں : راج کمار آنند

Paigam Madre Watan

ابراہیمی مذاہب میں اسلام سب سے زیادہ جمہوریت پسند مذہب ہے؍پروفیسرڈیٹریچ ریٹز

Paigam Madre Watan

میں بھی کیجریوال مہم میں، عوام نے کہا وہ وزیر اعلی اروند کیجریوال کے ساتھ کھڑے ہیں: دلیپ پانڈے

Paigam Madre Watan

Leave a Comment