Delhi دہلی

پی ایم ایل کے تحت، وہ کسی کو بھی جیل بھیجیں گے اور اس کی حکومت توڑیں گے اور اپنی حکومت بنائیں گے، ملک میں کیا ہو رہا ہے؟: اروند کیجریوال

نئی دہلی،دہلی کے وزیر اعلی اروند کیجریوال اور پنجاب کے وزیر اعلی بھگونت مان نے ملک کے وفاقی ڈھانچے کو بچانے کے لئے دہلی کے جنتر منتر پر کیرالہ کے وزیر اعلی پنارائی وجین کے ذریعہ منعقدہ دھرنے میں شرکت کی۔ اس دوران وزیر اعلی اروند کیجریوال نے کہا کہ ملک کا وفاقی ڈھانچہ ہمارے آئین اور جمہوریت کی بنیاد ہے، مرکز میں بیٹھی بی جے پی اسے ختم کرنا چاہتی ہے۔ یہ لڑائی ہم سب کی ملک کے وفاقی ڈھانچے اور جمہوریت کو بچانے کی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ملک کی نصف ریاستوں میں اپوزیشن کی حکومتیں ہیں، جنہیں مرکزی حکومت کام کرنے نہیں دے رہی ہے۔ مرکز ان ریاستوں کو مناسب فنڈ فراہم نہیں کر رہا ہے، ہر کام گورنر اور لیفٹیننٹ گورنر کے ذریعے ہو رہا ہے۔وہ ثابت قدم ہے اور کسی کو بھی جیل میں ڈالنے کے لیے تفتیشی ایجنسیوں کو بھیج رہی ہے۔ انہوں نے ہیمنت سورین کو پی ایم ایل اے کے تحت جیل میں ڈال دیا ہے، حالانکہ نہ تو تفتیش شروع ہوئی ہے اور نہ ہی الزامات ثابت ہوئے ہیں۔ اس طرح وہ مجھے یا کسی اور کو جیل میں ڈال دیں گے اور وہ بے گناہ ثابت ہونے سے پہلے باہر نہیں آ سکیں گے۔ اس وجہ سے ملک کہ عوام فیصلہ کرے کہ عوام کو مفت سہولیات فراہم کرنے والا کرپٹ ہے یا ہر چیز مہنگی کرنے والا کرپٹ ہے۔
آپ کے قومی کنوینر اور دہلی کے وزیر اعلی اروند کیجریوال نے کہا کہ جنتر منتر وہ جگہ ہے جہاں حکومتوں کے جبر سے تنگ آکر ملک کے لوگ احتجاج کرنے آتے ہیں۔ مرکزی حکومت کی زیادتیوں کے خلاف آج کیرالہ کے وزیر اعلیٰ کو اپنے تمام کام چھوڑ کر جنتر منتر آنا پڑا۔ یہ دن بھی ملک کودیکھنا پڑا۔ آج ملک کی تقریباً نصف ریاستوں میں اپوزیشن کی حکومتیں ہیں اور نصف ریاستوں میں ان لوگوں کی حکومتیں ہیں۔ اپوزیشن کی حکومتیں ملک کے تقریباً 70 کروڑ عوام کی نمائندگی کرتی ہیں۔ یعنی وہ آدھے ملک کی نمائندگی کرتے ہیں۔ اس وقت ایسا لگتا ہے کہ مرکزی حکومت نے اپوزیشن حکومتوں کے خلاف جنگ شروع کر دی ہے۔ بھارت اور پاکستان نے ہمارے ساتھ سلوک کیا۔
وزیر اعلیٰ اروند کیجریوال نے کہا کہ ہم مرکزی حکومت سے پوچھنا چاہتے ہیں، کیا آپ 70 کروڑ لوگوں کو اپنا نہیں سمجھتے، کیا آپ کیرالہ، تامل ناڈو، کرناٹک، پنجاب، دہلی، مغربی بنگال کے لوگوں کو اپنا نہیں سمجھتے، یہ لوگ اجنبی ہیں، کیا ہندوستان کے شہری نہیں؟ ان ریاستوں کے لوگوں نے مخالفت کی۔منتخب کرکے اپنی حکومت بنائی ان حکومتوں کے حقوق اور اختیارات کے بارے میں آئین میں واضح طور پر لکھا ہے، لیکن مرکزی حکومت اپوزیشن حکومتوں کو اپنا کام کرنے نہیں دے رہی ہے۔ مرکزی حکومت تمام اپوزیشن حکومتوں کو ہراساں کرنے کے لیے تمام حربے اپنا رہی ہے۔وزیر اعلیٰ نے کہا کہ مرکزی حکومت تین طریقوں سے اپوزیشن حکومتوں کو ہراساں کر رہی ہے۔ پہلا یہ کہ ملک کی وہ ریاستیں جہاں اپوزیشن کی حکومتیں ہیں وہ اپنا صحیح فنڈ فراہم نہیں کر رہی ہیں۔ تمام ریاستوں کو مرکز سے یہ فنڈ لینے کا حق ہے۔ دوسرا، مرکزی حکومت، گورنر اور لیفٹیننٹ گورنر کے ذریعے،آئے روز حکومتوں کے کام میں رکاوٹیں کھڑی کرتے ہیں۔ تیسرا، کسی کو بھی گرفتار کرکے جیل میں ڈالنے کے لیے ایجنسیاں بھیجی جارہی ہیں۔

Related posts

کیجریوال حکومت نے آنجہانی کورونا جنگجو پردیپ کمار کے خاندان کو ایک کروڑ روپے کا اعزازیہ فراہم کیا: راج کمار آنند

Paigam Madre Watan

امام خمینی اور مولانا خامنہ ای جو سیاسی طور پر بہت مماثلت رکھنے والی دو شخصیات ہیں،لیکن پھر بھی دونوں میں زمین آسمان کا فرق ہے، مولانا حسن علی راجانی

Paigam Madre Watan

ایس سی؍ ایس ٹی ؍ او بی سی بہبود کے وزیر نے ذات کے سرٹیفکیٹ کے اجراء کو تیز کرنے کے لیے ترقی پسند اقدامات کا اعلان کیا: راج کمار آنند

Paigam Madre Watan

Leave a Comment