Delhi دہلی

اس اسکیم کی وجہ سے صارفین کے 90 فیصد بل معاف کردیئے جائیں گے اور جل بورڈ کو دہلی حکومت کی سبسڈی کی وجہ سے محصول ملے گا: اروند کیجریوال

نئی دہلی، وزیر اعلی اروند کیجریوال نے پیر کو پانی کے غلط بلوں سے پریشان 10 لاکھ سے زیادہ لوگوں کو یقین دلایا کہ فکر نہ کریں، ہم آپ کے ساتھ کھڑے ہیں۔ حکومت ہر صورت میں دہلی جل بورڈ کی ون ٹائم سیٹلمنٹ اسکیم کو نافذ کرے گی۔ انہوں نے یاد دلایا کہ اس سے قبل وہ محلہ کلینک میں بھی کام کر چکے ہیں،سی سی ٹی وی، اسپتالوں کی دوائیں، فرشتے یوجنا اور ڈی ٹی سی پینشن روک دی گئی، لیکن ہم نے انہیں رکنے نہیں دیا۔ وزیراعلیٰ اسمبلی میں بجٹ اجلاس کے دوران اسکیم پر بحث کے لیے پیش کردہ قرارداد پر اظہار خیال کررہے تھے۔ انہوں نے کہا کہ اگر بی جے پی اس اسکیم کو پاس ہونے نہیں دیتی ہے تو اس کے خلاف دہلی میں زبردست تحریک چلائی جائے گی۔کیونکہ اس اسکیم کے نفاذ سے پانی کے 90 فیصد صارفین کے بل معاف ہو جائیں گے۔ اس کے علاوہ جل بورڈ کو دہلی حکومت کی سبسڈی کی وجہ سے کروڑوں روپے کا ریونیو بھی ملے گا۔ پھر بھی اس اسکیم کو روکنے کے لیے افسران کو دھمکیاں دی جارہی ہیں کہ اگر اسکیم پاس ہوئی تو انہیں جاری نہیں کیا جائے گا۔ اسی لیے میں ایل جی صاحب سے مصافحہ کرتا ہوں۔مزید استدعا ہے کہ وہ افسران کو اسکیم پاس کرنے کے لیے کہیں، اگر وہ پھر بھی ایسا نہیں کرتے تو انہیں معطل کر دیں۔دراصل اسمبلی میں بجٹ اجلاس کے دوران اسپیکر رام نیواس گوئل کی اجازت سے اراکین نے ڈی جے بی کی ون ٹائم سیٹلمنٹ اسکیم پر بحث کے لیے ایوان کے فلور پر ایک قرارداد پیش کی۔ قرارداد کی حمایت کرتے ہوئے وزیراعلیٰ اروند کیجریوال نے کہا کہ دہلی میں ہماری حکومت ہے۔ اس کے باوجود ہماری حکومت کا ایکپالیسی پر عمل نہیں کیا جا رہا ہے اور دہلی اسمبلی میں پالیسی کو لاگو کرنے کے لیے بحث جاری ہے۔ دہلی کے اندر لوگوں کو غلط بل مل رہے ہیں اور ان بلوں کو درست کرنے کے لیے یہ پالیسی لائی جا رہی ہے۔ آج ایوان میں حکمران جماعت کہہ رہی ہے کہ پانی کے صارفین کے غلط بل درست کیے جائیں اور اپوزیشن کہہ رہی ہے۔کہ بل ترتیب میں نہ ہوں۔ دہلی کے حوالے سے یہ ایک بڑی بے ضابطگی ہے۔ کہنے کو تو دہلی آدھی ریاست ہے، لیکن ہمیں لگتا ہے کہ پانچ فیصد بھی ریاست نہیں ہے۔ اگر دہلی ایک مکمل ریاست ہوتی تو کسی افسر کو وزیر اعلیٰ یا وزیر کے حکم کی خلاف ورزی کرتے ہوئے دو منٹ بھی اپنے عہدے پر رہنے کی جرات نہ ہوتی۔ اسے فوراً معطل کر دیا جاتا۔ یہ بحث آج اس لیے ہو رہی ہے کہ دہلی انتہائی گندی اور گھٹیا سیاست کا شکار ہے۔ دہلی ایک مکمل ریاست نہیں ہے اور اس لیے اصل طاقت مرکزی حکومت کے پاس ہے۔ مرکز میں کسی اور پارٹی کی حکومت ہے اور وہ دہلی میں منتخب حکومت نہیں چاہتی۔حکومت کام کر سکتی ہے۔

Related posts

تعمیراتی کارکنوں کو دیوالی پر کیجریوال حکومت کا تحفہ ، دہلی مزدور کلیان ایپ’ لانچ کی جائے گی: راج کمار آنند

Paigam Madre Watan

وزیر ماحولیات نے گریپ 4 کی سختی سے تعمیل کو یقینی بنانے کے لیے سرائے کالے خاں بس اسٹینڈ کا اچانک معائنہ کیا

Paigam Madre Watan

کیجریوال حکومت کا بڑا فیصلہ، اب ٹرانس جینڈر بھی دہلی کی بسوں میں مفت سفر کریں گے

Paigam Madre Watan

Leave a Comment

türkiye nin en iyi reklam ajansları türkiye nin en iyi ajansları istanbul un en iyi reklam ajansları türkiye nin en ünlü reklam ajansları türkiyenin en büyük reklam ajansları istanbul daki reklam ajansları türkiye nin en büyük reklam ajansları türkiye reklam ajansları en büyük ajanslar