Delhi دہلی

ایل جی صاحب کے خصوصی وکیل اور ان کے خصوصی وکلاء نے عدالت میں اروند کیجریوال کی طرف سے ادویات اور انسولین کے مطالبے کی مخالفت کی: آتشی

نئی دہلی، وزیر اعظم نریندر مودی اور مرکزی حکومت جیل میں اروند کیجریوال جی کو انسولین اور ضروری ادویات نہ دے کر ان کے خلاف ایک بڑی سازش رچ رہی ہے۔ تہاڑ انتظامیہ اور ای ڈی عدالت میں کیجریوال جی کی انسولین کی اپیل کی مخالفت کر رہے ہیں۔ آزاد ہندوستان کی تاریخ میں پہلی بار جیل ہوگی۔اگر کسی ملزم کو ڈاکٹر کی تجویز کردہ انسولین اور ادویات نہیں دی جارہی ہیں۔ AAP کے سینئر لیڈر آتشی نے جمعہ کو ایک پریس کانفرنس کے دوران اس سازش کا پردہ فاش کیا۔ انہوں نے کہا کہ ایل جی صاحب کے خصوصی وکیل اور ان کے خصوصی وکیلوں نے تہاڑ کی جانب سے اروند کیجریوال جی کی دوائیں عدالت میں پیش کیں۔اور انسولین کے مطالبے کی مخالفت کی۔ سوال پوچھتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ایل جی نے ان وکلاء کو اروند کیجریوال جی کی دوائیوں اور انسولین کی مخالفت کے لیے کیوں بھیجا؟ کیا ایل جی بھی اس سازش میں ملوث ہے؟ آتشی نے کہا کہ آزاد ہندوستان کی تاریخ میں یہ پہلا موقع ہوگا کہ جیل میں کسی قیدی کو ڈاکٹروں کی تجویز کردہ ادویات نہیں دی جائیں گی۔ آزادی سے پہلے انگریزوں نے آزادی پسندوں کے حوصلے پست کرنے کے لیے ایسے حربے استعمال کیے تھے۔ انہوں نے کہا کہ بی جے پی اور وزیر اعظم مودی جواب دیں – اروند کیجریوال جی۔جب انہوں نے عدالت میں انسولین اور ادویات فراہم کرنے کی اپیل کی تو مرکزی حکومت، ای ڈی، تہاڑ انتظامیہ اس کی مخالفت کیوں کر رہے تھے؟آتشی نے سوال پوچھا کہ تہاڑ جیل انتظامیہ نے اروند کیجریوال جی کی طبی تفصیلات کو غلط اور غیر قانونی طور پر ای ڈی کو کیوں اور کس شق کے تحت سونپا؟انہوں نے کہا کہ انگریز آزادی پسندوں کو جیل میں ڈالنے کے بعد جس طرح تشدد کا نشانہ بناتے تھے۔ وزیر اعظم نریندر مودی بھی یہی سازش اروند کیجریوال کے ساتھ کر رہے ہیں۔آتشی نے کہا کہ یہ آزاد ہندوستان کی تاریخ میں پہلی بار ہوگا کہ عدالتی حراست میں، جیل میں بند شخص کو اس کی دوائی لینے سے روکا جارہا ہے۔ یہ شخص کوئی غنڈہ، قاتل یا ڈاکو نہیں بلکہ دہلی کا وزیر اعلیٰ اروند کیجریوال ہے جو دہلی میں تین بار بھاری اکثریت سے منتخب ہوا تھا۔ انہوں نے کہا کہ سبھی جانتے ہیں کہ اروند کیجریوال جی کو 30 سال سے ذیابیطس ہے۔ ان کے ڈاکٹروں نے یہ بھی لکھا ہے کہ پہلے وہ انسولین کے 54 یونٹ لیتے تھے۔ لیکن آج بی جے پی اور وزیر اعظم نریندر مودی اروند کیجریوال جی کے خلاف سازش کر رہے ہیں ان کی دوائیں بند کر کے اور ان کو انسولین نہ دے کر۔ آتشی نے کہا کہ آزاد ہندوستان کی تاریخ میں ایسا پہلے کبھی نہیں ہوا ہوگا۔ جب بھی کوئی قیدی بیمار ہوتا ہے تو ڈاکٹر کی تجویز کردہ ادویات قیدی کو دی جاتی ہیں۔ لیکن آج اروند کیجریوال کو تہاڑ جیل کے اندر ان کی انسولین دینے سے انکار کیا جا رہا ہے۔ تہاڑ انتظامیہ، ای ڈی،پوری مرکزی حکومت عدالت میں آکر انسولین کا مطالبہ کرنے والی اروند کیجریوال کی اپیل کی مخالفت کر رہی ہے۔انہوں نے کہا کہ بی جے پی وزیر اعظم مودی کو یہ بتانا چاہئے کہ اگر اروند کیجریوال جی نے انسولین اور ادویات دینے کی درخواست دی تھی تو مرکزی حکومت، ای ڈی، تہاڑ انتظامیہ اس کی مخالفت کیوں کر رہے تھے۔آتشی نے کہا کہ ایسی باتیں ہندوستان کی آزادی سے پہلے سننے کو ملتی تھیں۔ سب جانتے ہوں گے کہ بھگت سنگھ جی نے جیل میں قیدیوں کے تشدد کی وجہ سے 1929 میں جیل میں بھوک ہڑتال کی تھی۔ کیونکہ پھر برطانوی جیلوں میں ہندوستانی آزادی پسندوں کی صحت خراب کرنے کے لیے، ان کے حوصلے کو توڑنے کے لییوہ ان پر تشدد کرتے تھے، انہیں مناسب خوراک نہیں دیتے تھے، دوائیاں نہیں دیتے تھے۔انہوں نے کہا کہ ہندوستان کی آزادی کے 75 سال بعد وزیر اعظم نریندر مودی وہی کام کر رہے ہیں جو آزادی سے پہلے انگریز کرتے تھے۔ وہ اپنے مخالفین کو مناسب خوراک، ادویات نہیں ملنے دے رہا اور جیل میں اذیتیں دے رہا ہے۔حقائق کو سامنے رکھتے ہوئے آتشی نے کہا کہ اروند کیجریوال جی کی دوائیوں کو روکنے کی یہ ایک بڑی سازش ہے۔ ایک میل کا حوالہ دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ تہاڑ انتظامیہ کی طرف سے ای ڈی کو ایک میل بھیجا گیا تھا، جس میں اروند کیجریوال جی نے کیا کھایا؟ کس وقت کھانا کھایا؟ اس بارے میں مکمل معلومات موجود ہیں۔انہوں نے کہا کہ کس قانونی دفعات کے تحت تہاڑ جیل انتظامیہ نے یہ تمام معلومات ای ڈی کو بھیجی ہے؟ جب کوئی شخص عدالتی تحویل میں ہوتا ہے تو وہ عدالت کی تحویل میں ہوتا ہے۔ تہاڑ انتظامیہ کو اگر کوئی معلومات بھیجنی ہیں تو عدالت کو بھیجیں، ای ڈی کو کیوں بھیجی جا رہی ہے معلومات؟ آتشی نے کہا کہ ای ڈی کا واحد کام منی لانڈرنگ کی تحقیقات کرنا ہے۔ انہوں نے کہا، کیا آپ نے اروند کیجریوال جی کی روٹی میں کیش ملایا؟ کیا ای ڈی اس کی تحقیقات کر رہی تھی؟ تہاڑ انتظامیہ نے اروند کیجریوال جی کا ڈائیٹ چارٹ اور ان کی طبی حالت سے متعلق معلومات ای ڈی کو کیوں بھیجی؟ای ڈی نے ان تمام طبی تفصیلات کو کس دفعات کے تحت عدالت میں داخل کیا؟ انہوں نے کہا کہ ای ڈی نے ایسا اس لیے کیا کیونکہ یہ وزیر اعظم نریندر مودی اور بی جے پی کی ذیلی تنظیم کی طرح کام کرتی ہے اور ان کا سیاسی ہتھیار ہے۔ اروند کیجریوال جی کی طبی تفصیلات ای ڈی کو غلط اور غیر قانونی طریقے سے سونپ دی گئیں۔

Related posts

بھارت جوڑو نیائے یاترا کی تیاریوں کے سلسلے میں کانگریس آفس پرتاپ گڑھ پہنچ کر میڈیا کے ساتھیوں سے بات چیت کرتے راجیہ سبھا سانسد اور آل انڈیا کانگریس کمیٹی اقلیتی مورچہ کے صدر عمران پرتاپ گڑھی

Paigam Madre Watan

A gathering in Srinagar, overseen by Rati President Prof. MA Najeeb, to address the media.

Paigam Madre Watan

اردو شاعری نے ہمیشہ عصری مسائل پر بے باکانہ اظہار کیا ہے : جے شنکر گپت 

Paigam Madre Watan

Leave a Comment

türkiye nin en iyi reklam ajansları türkiye nin en iyi ajansları istanbul un en iyi reklam ajansları türkiye nin en ünlü reklam ajansları türkiyenin en büyük reklam ajansları istanbul daki reklam ajansları türkiye nin en büyük reklam ajansları türkiye reklam ajansları en büyük ajanslar