Delhi دہلی

کیجریوال کے جائز سوال پر بی جے پی ناراض ہے اور امت شاہ کہہ رہے ہیں کہ مودی جی پر یہ اصول لاگو نہیں ہوگا: سنجے سنگھ

نئی دہلی، عام آدمی پارٹی کے قومی کنوینر اروند کیجریوال نے نریندر مودی کے اگلے سال ریٹائر ہونے پر سوال اٹھانے کے بعد، ایم پی سنجے سنگھ نے بی جے پی کے سینئر لیڈر امت شاہ کے بیان پر جوابی حملہ کیا۔ سنجے سنگھ نے کہا کہ مودی جی نے خود ایک اصول بنایا ہے کہ 75 سال کی عمر کے بعد بی جے پی لیڈران ریٹائر ہو جائیں گے۔ اس اصول کے تحت، اڈوانی جی، جوشی جی سمیت تمام بی جے پی لیڈر ریٹائر ہو گئے۔ اس لیے مودی جی کو ملک کو بتانا چاہیے کہ وہ اپنے بنائے ہوئے قوانین کو خود پر لاگو کیوں نہیں کریں گے؟اس سے واضح ہوتا ہے کہ وہ اقتدار کا لالچی ہیں۔ اگر مودی جی پر 75 سالہ حکمرانی کا اطلاق نہیں ہوتا تو بی جے پی کے بانی اڈوانی جی سمیت درجنوں لیڈروں کے ساتھ کیوں ڈیل کیا گیا؟ انہوں نے کہا، اروند کیجریوال کے اس جائز سوال پر پوری بی جے پی پریشان ہوگئی اور امت شاہ کہہ رہے ہیں کہ یہ اصول مودی جی پر لاگو نہیں ہوگا۔ اس لیے وزیر اعظم مودی کو بتانا چاہیے کہ آیا وہ 75 سال کی عمر پوری کر کے ریٹائر ہو جائیں گے یا وزیر اعظم بنے رہیں گے۔ اے اے پی کے سینئر لیڈر اور راجیہ سبھا ممبر سنجے سنگھ نے ہفتہ کو پارٹی ہیڈکوارٹر میں ایک پریس کانفرنس میں کہا کہ آج اروند کیجریوال نے بی جے پی سے ایک بہت ہی جائز سوال پوچھا ہے۔ وزیر اعظم نریندر مودی نے خود اپنی پارٹی کے لیڈروں کے لیے اصول اور ضابطے بنائے ہیں۔ مودی جی نے کہا کہ بی جے پی میں 75 سال کی عمر کے بعد اس کے بعد کسی کو الیکشن لڑنے کی ضرورت نہیں رہے گی اور وہ ریٹائر ہو جائے گا۔ اس فارمولے کے تحت بی جے پی کے بانی ایل کے اڈوانی اور مرلی منوہر جوشی کے علاوہ سابق مرکزی وزیر یشونت سنہا، لوک سبھا کی سابق اسپیکر سمترا مہاجن کو پیچھے چھوڑ دیا گیا۔ اس کے علاوہ بی جے پی کے کئی ارکان اسمبلی کے ٹکٹ بھی منقطع کیا گیا تھا. سنجے سنگھ نے کہا کہ آج جب اروند کیجریوال نے سوال اٹھایا کہ نریندر مودی 75 سال میں ریٹائر ہو جائیں گے اور وہ اگلے سال 75 سال کے ہونے والے ہیں۔ اپنی ریٹائرمنٹ کے بعد امت شاہ ملک کے وزیر اعظم بنیں گے۔ ایسے میں مودی جی کی ضمانت کون پوری کرے گا؟پہلی بات تو یہ کہ مودی جی نے اب تک جو گارنٹی دی ہے ان میں سے ایک بھی پوری نہیں کی ہے، لیکن اب جو گارنٹی دے رہے ہیں اس پر کوئی بھروسہ نہیں ہے۔ کیونکہ مودی جی اپنے بنائے ہوئے اصولوں کے مطابق ریٹائر ہو جائیں گے۔ سنجے سنگھ نے کہا کہ اروند کیجریوال کے اس جائز سوال کو سن کر امت شاہ اور پوری بی جے پی حیران رہ گئی۔ امت شاہ نے کہا کہ مودی جی کا بنایا ہوا اصول ایل کے اڈوانی، مرلی منوہر جوشی، سمترا مہاجن، یشونت سنہا اور دیگر لیڈروں کی سیاست کو ختم کرنے کے لیے لاگو ہوگا، لیکن یہ اصول نریندر مودی پر لاگو نہیں ہوگا۔ اس کا صاف مطلب ہے کہ مودی جی کے اصول، اقدار، خیالات اور الفاظ کی کوئی قیمت نہیں ہے۔ اس کا مطلب یہ ہے کہ مودی جی جو بھی اصول بناتے ہیں، وہ انہیں خود پر لاگو نہیں کریں گے۔ مجھے لگتا ہے کہ امت شاہ کا بیان کافی نہیں ہے۔ اس لیے وزیراعظم نریندر مودی کو سامنے آکر کہنا چاہیے۔کہ وہ اصولوں کے بغیر انسان ہے۔ انہوں نے بی جے پی کے دیگر لیڈروں کے لیے جو اصول بنائے ہیں وہ ان پر لاگو نہیں ہوں گے۔ وزیراعظم کو یہ واضح کرنا چاہیے۔ سنجے سنگھ نے کہا کہ مودی جی کو یہ بھی واضح کرنا چاہئے کیونکہ اروند کیجریوال کے بیان کے بعد امت شاہ اور جے پی نڈا کہہ رہے ہیں کہ مودی جی پر یہ اصول لاگو نہیں ہوں گے۔ اس لیے مودی جی کو بتانا چاہیے کہ کیا بی جے پی اس پر متفق ہے؟ کیونکہ بی جے پی کے تمام کارکنوں نے 75 سالوں میں لیڈروں کو شکست دی ہے۔مودی جی کے ریٹائرمنٹ کے فیصلے کا خیرمقدم کیا گیا۔ کیا بی جے پی کارکنان اور آر ایس ایس جے پی نڈا اور امت شاہ کے بیانات سے مطمئن ہیں؟ وزیر اعظم کو خود سامنے آ کر یہ کہنا چاہیے۔ کیونکہ اس نے اصول اور اصول بنائے ہیں۔ اب وزیراعظم آکر بتائیں کہ کیا ان کے بنائے ہوئے قوانین اورچاہے وہ اپنے اصولوں پر ڈٹے رہے ہوں یا اقتدار کی لالچ کی وجہ سے وہ زندگی بھر ایک ہی عہدے پر فائز رہے گے۔ بہرحال ملک کے عوام 4 جون کو مودی جی کو ہرانے والے ہیں۔ پھر بھی مودی جی کو خود اس کی وضاحت کرنی چاہیے۔

Related posts

دہلی میں فضائی آلودگی پر تشویش، وزیر اعلی اروند کیجریوال نے ایک اعلیٰ سطحی میٹنگ کی، 13سے 20نومبر تک اور آڈ – ایون نافذ ہوگا:گوپال رائے

Paigam Madre Watan

اقرا انٹرنیشنل اسکول میں جلسہ سیرت النبی ﷺ و دستار بندی حفاظ کرام کا کامیاب انعقاد

Paigam Madre Watan

وزیر اعظم فرقہ وارانہ جذبات کو بھڑکانے والے تقاریر کے بعد اب بے معنی تقاریر کررہے ہیں۔ ایس ڈی پی آئی

Paigam Madre Watan

Leave a Comment

türkiye nin en iyi reklam ajansları türkiye nin en iyi ajansları istanbul un en iyi reklam ajansları türkiye nin en ünlü reklam ajansları türkiyenin en büyük reklam ajansları istanbul daki reklam ajansları türkiye nin en büyük reklam ajansları türkiye reklam ajansları en büyük ajanslar