Blog

’’امن اور فرقہ وارانہ ہم آہنگی‘‘کے موضوع پر ڈائیلاگ کا انعقاد

 

نئی دہلی(پی ایم ڈبلیو، بیورو) مذہبی سیاست اورذات پات ومذہب کی بنیاد پر تفریق ناقابل قبول اور تشویشناک ہے ان خیالات کا اظہار سوامی شری رگھوویدرا داس جی مہاراج،بانی ستیہ دھرم سمواد نے ’’امن اور فرقہ وارانہ ہم آہنگی‘‘کے موضوع پر مشاورت کے مرکزی دفتر،ابوالفضل،دہلی منعقد ایک اجلاس میں کیا۔انھوں نے ہری دوار کے حالیہ دھرم سنسد کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ وہ دھرم سنسد نہیں وہ سیاسی سنسد تھااور جو سادھوسنت،پادری،عالم،فقیر،مہاتما تشددکی بات کرتے ہیں یا وکالت کرتے ہیں وہ انسانیت کے دشمن ہیں اور یہ لوگ جو مذہبی نمائندہ ہونے کا دعوی کرتے ہیں ان میں سے 70فیصدنے مہابھارت پڑھی بھی نہیں ہوگی۔انھوں نیفلسطین کی حمایت کرتے ہوئے معصوم،بے گناہ اور مظلوم افراد کے قتل عام کوشرمناک عمل بتایا اوامن و امان قائم کرنے اور فرقہ وارانہ ہم آہنگی کو فروغ دینے پر بھی زوردیا۔آل انڈیا مسلم مجلس مشاورت سکریٹری جنرل سید تحسین احمد نے اپنے خطاب میں کہا کہ مشاورت مذہبی تشہیرکا مقام نہیں ہے بلکہ یہ مختلف ملی و مسلم مذہبی تنظیموں، سماجی گروپوں کا ایک وفاق ہے، جو ہم آہنگی کو فروغ دینے اور اس متنوع قوم کے سماجی تانے بانے کی حفاظت نیز حق و انصاف قائم کرنیکے لیے کوشاں ہے۔مشاورت بین المذاہب ہم آہنگی اور مشترکہ تہذیبی ڈائیلاگ کوبھی فروغ دیتی ہے۔فیصل خان،کنوینرخدائی خدمتگار نے کہا کہ اس وقت انسانیت اور محبت کی بات کرنا مشکل ہو گیا ہے اسلئے فرقہ وارانہ ہم آہنگی اور بھائی چارگی کے لئے مشترکہ کوششوں کی ضرورت ہے۔پوربل پرتاپ شاہی،کسان لیڈر نے کہا کہ جیواور جینے د و کا اصول نافذہو، اس کے لئے ہمیں متحد ہونے کی اشد ضرورت ہے۔ اجلاس کا اہتمام دہلی خدائی خدمت گار،آل انڈیا مسلم مجلس مشاورت ،سوسائٹی فار کمیونل ہارمونی، اور دہلی بھار ت جوڑو ابھیان کی جانب سے کیا گیا تھا۔پروگرام میں رضوان خان،قومی اآرگنائزرخدائی خدمتگار،ڈاکٹر جتیندر کمار،نوین تیواری،ریاستی کونسل ممبر دہلی بھارت جوڑو ابھیان،پرویز عالم،ارشد انصاری،چاند شیخ،ابھے سنگھ،ایلیاکمار، عامر وغیرہ نے شرکت کی۔
نئی دہلی(پی ایم ڈبلیو، بیورو) 

Related posts

“Harmony’s Horizon: Dr. Nowhera Shaikh’s Visionary Journey for a Flourishing Arunachal Pradesh”

Paigam Madre Watan

باور کرو وہ زمانہ دُور نہیں، تاریخ انگڑائی لے چکی ہے! جغرافیہ کمر کھول رہا ہے اذان فجر ہوگی اور ضرور ہوگی، تب مسلمانوں کو احساس ہوگا کہ اُن کی خانہ ویرانی میں اپنوں ہی کا ہاتھ تھا اور ان کی سوختہ سامانی کے ذمہ دار اپنے ہی چراغ تھے، تب میری آواز تاریخ کے گنبد سے آرہی ہوگی

Paigam Madre Watan

ہریانہ میں’ بدلاؤ جن سبھا’ کر بولے ا روند کیجریوال آپ کی حکومت بنادو، میں بجلی 24 گھنٹے اور مفت کر دوں گا

Paigam Madre Watan

Leave a Comment

türkiye nin en iyi reklam ajansları türkiye nin en iyi ajansları istanbul un en iyi reklam ajansları türkiye nin en ünlü reklam ajansları türkiyenin en büyük reklam ajansları istanbul daki reklam ajansları türkiye nin en büyük reklam ajansları türkiye reklam ajansları en büyük ajanslar