Delhi دہلی

دہلی کے بعد اب پنجاب میں بھی حکومت عوام کے گھر گھر جا کر کام کرے گی، دہلی کے وزیر اعلی اروند کیجریوال اور پنجاب کے وزیر اعلی بھگونت مان نے ‘ڈور اسٹیپ’ اسکیم کا آغاز کیا

پنجاب میں AAP حکومت نے ‘ڈور اسٹیپ’ ڈیلیوری خدمات شروع کرکے کیجریوال کی ایک اور گارنٹی کو پورا کیا


شہید بھگت سنگھ کا خواب تھا کہ حکومتیں خود عوام کی دہلیز پر آئیں اور ان کا کام کریں، آج تک حکومتوں نے اس طرف توجہ نہیں دی: بھگونت مان


نئی دہلی،(پی ایم ڈبلیو نیوز)دہلی کے بعد اب آپ کی حکومت پنجاب میں بھی لوگوں کے گھر گھر جائے گی اور ان کے لیے کام کرے گی۔ اتوار کو لدھیانہ میں منعقدہ ایک پروگرام کے دوران، عام آدمی پارٹی کے قومی کنوینر اور دہلی کے وزیر اعلی اروند کیجریوال اور پنجاب کے وزیر اعلیٰ سردار بھگونت مان نے ‘ڈور اسٹیپ’ اسکیم کو جھنڈی دکھائی۔ اس کے ساتھ ہی AAP حکومت نے اروند کیجریوال کی ایک اور گارنٹی پوری کر دی ہے۔ وزیر اعلی اروند کیجریوال نے کہا کہ اب لوگوں کو سرکاری دفاتر نہیں جانا پڑے گا اور نہ ہی انہیں اپنا کام کروانے کے لیے دلالوں کو پیسے دینے پڑیں گے، بلکہ حکومت خود لوگوں کے گھر جا کر کام کرے گی۔ اس کے لیے لوگوں کو 1076 کی ضرورت ہے۔آپ کو اس نمبر پر کال کرکے اپنے کام کی وضاحت کرنی ہوگی۔ فی الحال اس میں 43 خدمات شامل کی گئی ہیں اور آہستہ آہستہ 100 فیصد خدمات گھر بیٹھے دستیاب ہوں گی۔ اس سے تقریباً چار ہزار نوجوانوں کو نئی ملازمتیں بھی ملیں گی۔ انہوں نے کہا کہ جو کام عام آدمی پارٹی کی حکومت نے دہلی پنجاب میں کیا وہ 75 سال میں دوسری پارٹیاں نہیں کر سکیں کیونکہ ان کی نیت خراب ہے۔دہلی کے وزیر اعلی اروند کیجریوال نے کہا کہ آج کا دن نہ صرف پنجاب بلکہ پورے ملک کے لیے بہت انقلابی دن ہے۔ شہید بھگت سنگھ سمیت ہمارے ملک کے تمام آزادی پسندوں نے قربانیاں اس لیے نہیں دیں کہ ایک دن ملک آزاد ہوگا اور لوگ سرکاری دفاتر کے چکر لگائیں گے۔ ان کا خیال تھا کہ ملک آزاد ہونے کے بعد لوگوں کو سہولت ملیں گی۔ عوام کو اچھی صحت، تعلیم، ادویات، سڑکیں، بجلی، پانی ملے گا۔ لیکن پچھلے 75 سالوں سے ہمارے ملک میں ایک ایسا نظام چل رہا ہے جس میں ایک چھوٹا سا کام کروانے کے لیے بھی سرکاری دفاتر کے کئی چکر لگانے پڑتے ہیں۔ آج پنجاب کے اندر ڈور اسٹیپ کا آغاز کیا جا رہا ہے جو کسی انقلاب سے کم نہیں۔ یہ کام 75 سال پہلے ہو جانا چاہیے تھا۔ اس وقت اگر کسی کو سرکاری دفتر سے کوئی کام کروانا ہو تو اسے اپنے دفتر سے چھٹی لینا پڑتی ہے، کھیتی باڑی کا کام چھوڑ کر یا دکان بند کرکے سرکاری دفتر جانا پڑتا ہے۔ اسے ایک طویل وقت کے لئیگھنٹوں لائنوں میں کھڑا رہنا پڑتا ہے اور جب اس کی باری آتی ہے تو دفتر بند ہو جاتا ہے۔ کئی چکر لگانے کے بعد آدمی تھک جاتا ہے اور پھر اپنا کام کروانے کے لیے ایک دلال کو پیسے دیتا ہے۔دہلی کے وزیر اعلیٰ اروند کیجریوال نے کہا کہ پنجاب میں آج سے ”ڈور اسٹیپ’ شروع ہو رہی ہے۔ اب کسی کو سرکاری دفتر جانے کی ضرورت نہیں۔ اب آپ کے سرکاری دفاتر، وزراء ، وزیر اعلیٰ اور ایم ایل اے سے متعلق کام گھر بیٹھے ہوں گے۔ نہ صرف یہ کہ آج 43 سروسز شروع کی جا رہی ہیں بلکہ پنجاباب حکومت پنجاب کی 99 فیصد خدمات عوام کو گھر بیٹھے دستیاب ہوں گی اور آہستہ آہستہ پنجاب حکومت کی تمام سروسز گھر بیٹھے دستیاب ہوں گی۔ ایک دن آئے گا جب ہم پنجاب حکومت کے تمام دفاتر کو تالے لگا دیں گے اور آپ کو دفاتر جانے کی ضرورت نہیں پڑے گی۔وزیر اعلی اروند کیجریوال نے کہا کہ فرض کریں کہ کوئی ذات، آمدنی، پیدائش، موت کا سرٹیفکیٹ بنوانا چاہتا ہے، تو اب آپ کو سرکاری دفتر جانے کی ضرورت نہیں ہے۔ اب آپ ہیلپ لائن نمبر 1076 ڈائل کریں گے۔ سرکاری ملازم آپ سے آپ کے کام کے بارے میں پوچھے گا۔ آج آپ جو بھی سرٹیفکیٹ بنوانا چاہتے ہیں، عملہ آپ کو اس سے متعلق معلومات فراہم کرے گا۔کاغذات تیار کرنے کو کہیں گے۔ اگر آپ کے پاس تمام دستاویزات ہیں، تو ملازم پوچھے گا کہ اسے آپ کے گھر کام کے لیے کس وقت آنا چاہیے۔ آپ سرکاری ملازم کو وہ وقت بتائیں گے جب آپ فارغ ہوں گے اور مل سکتے ہیں۔ اسی وقت، سرکاری دفتر سے ایک ملازم آپ کے گھر آئے گا، اصل دستاویزات کی فوٹو کاپیاں لے کر آپ کے گھر لے جائے گا۔اور 10 سے 15 دن میں وہ سرٹیفکیٹ تیار کر کے آپ کے گھر آ جائے گا۔ انہوں نے بتایا کہ دہلی میں ستمبر 2018 میں ‘ڈور اسٹیپ’ ترسیل شروع کی گئی تھی۔ پچھلے پانچ سالوں میں لاکھوں لوگوں نے فون کیا اور گھر بیٹھے اپنے کام کروائے۔ ہم نے دہلی حکومت اور دہلی کے لوگوں کے کئی دفاتر کو تالے لگا دیے ہیں۔سرکاری دفتر جانے کی ضرورت نہیں۔وزیر اعلی اروند کیجریوال نے کہا کہ اگر دہلی اور پنجاب میں عام آدمی پارٹی کی حکومت اس اسکیم کو شروع کر سکتی ہے تو پھر ان دیگر پارٹیوں کی حکومتوں نے 75 سالوں میں اسے شروع کیوں نہیں کیا۔ یہ بھی سوچنے کی بات ہے کہ اگر دہلی حکومت نے یہ کام پانچ سال پہلے شروع کیا تھا تو آج تک مدھیہ پردیش، راجستھان یا مہاراشٹر کی حکومت نے شروع کیوں نہیں کیا؟کیونکہ ان کی نیت خراب ہے۔ جب آپ سرٹیفکیٹ بنوانے جاتے ہیں اور کسی دلال کو پیسے دیتے ہیں تو نہ صرف دلال وہ رقم اپنے پاس رکھتا ہے بلکہ یہ رقم افسران، وزراء اور وزیر اعلیٰ تک بھی پہنچ جاتی ہے۔ پنجاب کے عوام نے عام آدمی پارٹی کی ایماندار حکومت بنائی ہے۔پنجاب کے لوگ ایماندار ہیں۔وزیر اعلیٰ، وزیر اور ایم ایل اے منتخب ہو چکے ہیں۔ ہم پیسے نہیں کھاتے۔ ہمیں پیسے کی ضرورت نہیں، ہمیں عوام کی محبت اور اعتماد ملا ہے، بس۔ ہمیں یقین بھی نہیں تھا کہ خدا ہمیں اس حد تک لے جائے گا۔ پنجاب میں آج جو کام شروع ہوا ہے وہ عام آدمی پارٹی کی حکومت ہی کر سکتی ہے۔ ” کوئی دوسری جماعت یہ کام نہیں کر سکتی کیونکہ انہیں پیسے کمانے ہوتے ہیں۔ ہماری نیت صاف ہے۔وزیر اعلی اروند کیجریوال نے کہا کہ جب سے بھگونت مان پنجاب کے وزیر اعلیٰ بنے ہیں، بدعنوانی کے خلاف ایک کے بعد ایک کام ہو رہا ہے۔ پنجاب میں بڑی مچھلیاں (کرپٹ) پکڑی گئیں۔ AAP حکومت نے پنجاب کا پیسہ لوٹنے والے رہنماؤں کے گھروں پر چھاپے مارے اور انہیں گرفتار کیا۔ بھگونت مان وہ ایک بہادر اور نڈر آدمی ہے، کسی سے ڈرنے والا نہیں۔ جس نے بھی پنجاب کو لوٹا وہ جیل جائے گا اور ان سے لیا گیا سارا پیسہ واپس لے کر عوام پر خرچ کریں گے اور اسکول اور اسپتال بنائیں گے۔ وزیر اعلی بھگونت مان نے ایک اور کام کیا تھا کہ اگر کوئی رشوت مانگتا ہے تو اس کا فون نکال کر ریکارڈ کر لیتے ہیں۔ پورا پنجاب تمام سرکاری دفاتر کے اندر دہشت پھیل گئی اور رشوت ستانی بند ہو گئی۔ لیکن کئی افسران نے کام کرنا چھوڑ دیا۔ پنجاب میں ”ڈور اسٹیپ” اسکیم کا آغاز AAP حکومت کا بدعنوانی کے خلاف اٹھایا گیا سب سے بڑا قدم ہے۔ آپ حکومت نے پنجاب میں تحد شروع کر دی ہے۔’دوار’ کا آغاز کر کے ہم نے کرپشن میں ملوث افراد پر سب سے بڑا ہتھوڑا مارا ہے۔ پنجاب میں آنے والی نسلیں یہ بھی یاد رکھیں گی کہ پنجاب کو ایک آزادی 15 اگست 1947 کو اور دوسری آزادی 10 دسمبر 2023 کو ملی۔اس اسکیم کے تحت ہونے والے سرکاری کاموں کے بارے میں جانکاری دیتے ہوئے وزیر اعلی اروند کیجریوال نے کہا کہ اس میں 43 طرح کے کام ہوں گے، جس میں اس کے تحت گھر بیٹھے 80 سے زیادہ خدمات حاصل کی جاسکتی ہیں۔ آنے والے دنوں میں پنجاب حکومت کے تمام کاموں کو زیربحث لایا جائے گا۔ اس اسکیم کو شروع کرتے ہوئے پنجاب4 ہزار نوجوانوں کو نوکریاں بھی ملیں گی۔ اب تک وزیر اعلی بھگونت مان کی قیادت میں عام آدمی پارٹی کی حکومت نے 40 ہزار لوگوں کو سرکاری نوکریاں دی ہیں۔ ‘ڈور اسٹیپ’ اسکیم کے آغاز کے بعد مزید 4 ہزار نوجوانوں کو روزگار ملے گا۔ ہم سب نے مل کر پنجاب سے بے روزگاری کو بتدریج ختم کرنا ہے۔ انہوں نے کہا کہ جب ہم پنجاب کے لوگجب ہم ووٹ مانگنے عوام کے درمیان گئے تو کرپشن کے خاتمے کی گارنٹی دی تھی۔ آج ہم آہستہ آہستہ اس ضمانت کو پورا کر رہے ہیں۔ یہ عام آدمی پارٹی کی ضمانت ہے۔ یہ خام گارنٹی نہیں ہے۔آپ کے قومی کنوینر اروند کیجریوال نے کہا کہ وہ پچھلے کچھ مہینوں سے ہر ہفتے پنجاب آ رہے ہیں۔ ابھی چند دن پہلے ہم نے پنجاب کے اندر وزیر اعلیٰ یاترا اسکیم کا آغاز کیا تھا۔ پنجاب کے معمر افراد کو ملک کے اندر مختلف مقامات کی زیارت کے لیے لے جانے کے لیے ٹرینوں کا آغاز کر دیا گیا ہے۔اب پنجاب کے ہزاروں بزرگ زیارت کر سکیں گے اور ایک نوجوان بھی ان کے ساتھ جا سکے گا۔ اس کے علاوہ ہوشیار پور اور گورداسپور لوک سبھا حلقوں میں ہزاروں کروڑ روپے کے ترقیاتی کام شروع کئے گئے ہیں۔ اتنا کام کرنے کے لیے پیسہ کہاں سے آتا ہے؟ پنجاب کو اتنا پیسہ مل رہا ہے کیونکہ "آپ”حکومت ایماندار ہے۔ میں اپیل کروں گا کہ پنجاب کے عوام ہم پر اسی طرح اعتماد رکھیں۔ انہوں نے انتخابات کے دوران جو کہا تھا اسے یاد دلاتے ہوئے کہا کہ ہم نے کہا تھا کہ پانچ سال میں اتنا کام کر لیں گے کہ اگلی بار انتخابی مہم میں آنے کی ضرورت نہیں پڑے گی۔ ہم آپ کو یہ بتائیں گے کہ پانچ سالوں میں اگر آپ کو آپ حکومت کا کام پسند ہے تو ہمیں ووٹ دیں اور اگر آپ کو کام پسند نہیں ہے تو ہمیں ووٹ نہ دیں۔اس دوران پنجاب کے وزیراعلی بھگونت مان نے کہا کہ مستقبل میں بچوں کی کتاب میں یہ سوال پوچھا جائے گا کہ لوگوں کو سرکاری دفاتر جانے سے کب نجات ملے گی تو جواب ملے گا کہ 10 دسمبر 2023 کو عام لدھیانہ میں آدمی پارٹی کے قومی رابطہ کار اور دہلی کے وزیر اعلی اروند کیجریوال نے ‘ڈور اسٹیپ’ سروس شروع کر دی۔ اس سے پہلے دہلی میں لوگوں کو یہ سہولت فراہم کی جا رہی تھی۔ انہوں نے کہا کہ میں ہمیشہ چاہتا تھا کہ یہ حکومت بدھ اور جمعرات کو ختم ہو جائے۔ ان سرکاری دفاتر کے چکر لگاتے ہوئے لوگوں کے جوتے پھٹ جاتے ہیں لیکن کوئی کام نہیں ہوتا۔ مجھے خوشی ہے کہ لوگ اس پریشانی کا سامنا کر رہے ہیں۔مجھے اسے ختم کرنے کا موقع ملا ہے۔ تاہم اس اسکیم کو پورے پنجاب میں شروع ہونے میں کچھ وقت لگے گا کیونکہ اس کے لیے تمام ملازمین کو مکمل تربیت دینا ہو گی اور اس عمل کو آسان بنانے کے لیے کچھ ضروری تیاری بھی کرنا ہو گی۔ اس اسکیم کے لیے سب سے پہلے لدھیانہ کا انتخاب کیا گیا ہے، کیونکہ یہ پنجاب میں واقع ہے۔ یہاں سے شروع ہونے والی سروس بتدریج پورے پنجاب تک پھیل جائے گی۔ اب چاہے آپ ذات کا سرٹیفکیٹ حاصل کرنا چاہتے ہیں یا ڈرائیونگ لائسنس، جب آپ اپنے فون سے 1076 نمبر ڈائل کرتے ہیں، ایک بار جب آپ کے مطلوبہ دستاویزات مکمل ہوجائیں تو، آپ اپنے کاغذات بنانے کے لیے کسی بھی وقت افسر کو کال کرسکتے ہیں۔ اس اسکیم کے ذریعے ایک سے دوایک دن میں آپ کے تمام سرکاری سرٹیفکیٹ گھر بیٹھے تیار ہو جائیں گے۔ اس سروس کو شروع کرنا بڑی بات ہے۔ اگرچہ آج ‘ڈور اسٹیپ’ یوجنا کے تحت 43 خدمات شروع کی جا رہی ہیں، لیکن حقیقت میں آج ہم ایسی 80 سے زیادہ خدمات شروع کر رہے ہیں۔ اس کے علاوہ لوگوں کی شکایات سننے کے لیے ایک الگ سیکشن بھی ہے۔وزیر اعلی بھگونت مان نے کہا کہ یہ شہید بھگت سنگھ کا خواب تھا کہ حکومتیں خود عام لوگوں کی دہلیز پر آئیں اور ان کا کام کریں۔ آج تک کی حکومتوں نے اس طرف کوئی توجہ نہیں دی۔ ہم نے اقتدار چوری کرنے والوں کے حوالے کیا تھا۔ اتنے سالوں سے ہم چور اور اچھے آدمی میں فرق نہیں کر سکے۔ لیکن اس بار آپ نے ایماندار حکومت منتخب کی ہے۔ پنجابی ایک محنتی کمیونٹی ہے۔ آپ اور میں مل کر اسے نمبر ون بنائیں گے۔ پنجابیوں کے لیے کوئی کام ناممکن نہیں۔ پنجابی دنیا میں جہاں بھی گئے ہیں کامیاب ہوئے ہیں۔ پنجاب میں بھی کامیابی کا دور شروع ہو گیا ہے۔ لوگوں کو نوکریاں مل رہی ہیں، اس وقت ہم نے 40 ہزار سے زائد سرکاری نوکریاں دی ہیں۔ٹاٹا اسٹیل لدھیانہ میں بھی اپنی فیکٹری لگا رہے ہیں۔ پنجاب میں سرمایہ کاری کے باعث یہاں تقریباً دو لاکھ ستانوے ہزار افراد کو روزگار ملے گا۔ اب ہمارے لوگوں کو گھر بار چھوڑ کر امریکہ جانے کی ضرورت نہیں پڑے گی۔ انہیں اپنی سرزمین پر روزگار ملے گا۔ آپ نے مجھے ذمہ داری دی ہے۔ آپ مجھ پر بھروسہ کریں، ہم یہ کام بغیر کسی چوری کے کرتے ہیں۔پوری ایمانداری سے حکومت چلائیں گے۔

Related posts

آبی وزیر آتشی نے معائنہ کا سلسلہ جاری رکھا – سیور کی شکایات کے پیش نظر، چتلا گیٹ، چاوڑی بازار اور نہرو ہل جے جے کالونی کے گراؤنڈ زیرو پر معائنہ کیا گیا

Paigam Madre Watan

Mutiur Rahman Aziz assumed the role of President for the All India Minority Wing through a fair and just  selection process.

Paigam Madre Watan

ملک کے پہلوان ساتھیوں کو بی جے پی سے انصاف نہیں ملا، ساکشی ملک نے مایوسی میں ریسلنگ چھوڑ دی ہے: درگیش پاٹھک

Paigam Madre Watan

Leave a Comment