Delhi دہلی

عام آدمی پارٹی کے راجیہ سبھا ایم پی ڈاکٹر سندیپ پاٹھک نے پارلیمنٹ میں پنجاب کے رکے ہوئے فنڈز کا معاملہ اٹھایا

مرکز کو غلط طریقے سے روکے گئے پنجاب کے تقریباً 8,000 کروڑ روپے کو فوری طور پر جاری کرنا چاہئے: سندیپ پاٹھک


نئی دہلی(پی ایم ڈبلیو نیوز)پنجاب سے عام آدمی پارٹی کے راجیہ سبھا ممبر پارلیمنٹ اور قومی تنظیم کے جنرل سکریٹری ڈاکٹر سندیپ پاٹھک نے پیر کو پارلیمنٹ میں پنجاب کے رکے ہوئے فنڈز کا مسئلہ اٹھایا۔ ڈاکٹر پاٹھک نے مرکزی حکومت سے پنجاب کے تمام زیر التواء فنڈز جاری کرنے کی اپیل کی۔ پارلیمنٹ سے خطاب کرتے ہوئے ڈاکٹر۔سندیپ پاٹھک نے کہا کہ مرکز کی بی جے پی حکومت نے پنجاب کے بہت سے فنڈز روک دیے ہیں۔ یہ پیسہ پنجاب کے عوام کا حق ہے، اسے فوری جاری کیا جائے۔ ڈاکٹر سندیپ پاٹھک نے کہا کہ مرکز پنجاب حکومت کے RDF (دیہی ترقی فنڈ) کے 5,500 کروڑ روپے کا مقروض ہے۔ یہ فنڈ پنجاب کی منڈیوں اور دیہی علاقوں میں استعمال کیا جائے گا۔علاقے میں سڑکوں کی تعمیر اور دیکھ بھال کے لیے استعمال کیا جاتا ہے۔ پچھلی حکومتوں نے اس فنڈ کو دوسرے مقاصد کے لیے استعمال کیا جس کی وجہ سے مرکزی حکومت نے اس فنڈ کو بند کردیا۔ اب پنجاب میں نئی حکومت ہے اور پنجاب کی معزز حکومت نے نئے قوانین بھی بنائے ہیں یہ رقم صرف منڈیوں اور دیہی علاقوں سڑکوں پر خرچ کیا جائے گا۔ اس لیے مودی حکومت کو یہ فنڈ بغیر کسی تاخیر کے جاری کرنا چاہیے۔ انہوں نے مزید کہا کہ NHM (نیشنل ہیلتھ مشن) کے 621 کروڑ روپے بھی زیر التوا ہیں۔ مرکزی حکومت یہ کہہ کر یہ رقم جاری کرنے سے انکار کر رہی ہے کہ یہ عام آدمی کے کلینک کے لیے نہیں ہے۔ سندیپ پاٹھک نے پارلیمنٹ کو بتایا کہ این ایچ ایم کے فنڈز پنجاب میں عام آدمی کلینکس پر خرچ نہیں کیے جا رہے ہیں کیونکہ یہ پنجاب حکومت کا اپنا الگ فنڈ ہے۔ یہ رقم ادویات، طبی آلات، تحصیل اور ضلعی سرکاری اسپتالوں کے لیے ہے۔ اس لیے وہ اسے غیر منصفانہ طریقے سے روک رہے ہیں۔ راجیہ سبھا کے رکن ڈاکٹر سندیپ پاٹھک نے مزید کہا کہ اس کے علاوہ مرکزی حکومت ایم ڈی ایف کے 850 کروڑ روپے اور خصوصی امدادی فنڈ کے 1800 کروڑ روپے کو بھی دبا رہی ہے۔ڈاکٹر سندیپ پاٹھک نے کہا کہ مجموعی طور پر یہ تقریباً 8000 کروڑ روپے بنتے ہیں، جو پنجاب کے لوگوں کا حق ہے۔ انہوں نے مرکزی حکومت سے یہ فنڈز جاری کرنے کی اپیل کی ہے۔ انہوں نے کہا کہ اگر مودی حکومت پنجاب کو اپنا پیسہ دینے سے انکار کرتی رہی تو اس کے پاس سپریم کورٹ سے رجوع کرنے کے علاوہ کوئی چارہ نہیں بچے گا۔ سپریم عدالت میں پہلے ہی تقریباً 35,000 ریاستی اور مرکزی حکومت کے مقدمات زیر التوا ہیں، اس لیے مودی حکومت کو پنجاب کے لوگوں کے لیے صحیح کام کرنا چاہیے۔ مرکزی حکومت کو یہ رقم فوری طور پر جاری کرنی چاہئے تاکہ ترقیاتی کام ہو سکیں اور بغیر کسی مالی رکاوٹ کے صحت کی سہولیات فراہم کی جا سکیں۔

Related posts

مرکزی بی جے پی حکومت پارلیمنٹ کے ارکان کے لیے بھی تحفظ کو یقینی بنانے میں ناکام ۔ ایس ڈی پی آئی

Paigam Madre Watan

گلشن زبیدہ شکاری پور میں جشن یوم اطفال

Paigam Madre Watan

وزیر قانون آتشی نے ساکیت کورٹ کمپلیکس کا معائنہ کیا، نئے تعمیر شدہ بلڈنگ بلاک میںسیلن کا مسئلہ دیکھ کر عہدیداروں کی سرزنش کی

Paigam Madre Watan

Leave a Comment