Parwaz پرواز

’دعا بدرگاہ رب العلٰی‘

تخلیق: مولانا عزیزالرحمن سلفی (ماخوذ: شعری مجموعہ پرواز)


تری بارگہ میں اٹھّا، مرا دست ناتواں ہے
تری ذات کبریا ہے، تو غفور عاصیاں ہے

تری ذات غیر فانی، مری جاں ہے آنی فانی
مری ہر نمود لاشے، تو بہار گلستاں ہے

ترا حکم آسماں پر، ترا حکم بحر و بر پر
تو شہنشہِ جہاں ہے، تومکین لامکاں ہے

مجھے ہر طرف سے گھیرے، مری گمرہی ہے یارب
مجھے روشنی عطا کر، تری روشنی کہاں ہے

میں ہوں ذرہ بے حقیقت، تری ہرجگہ حکومت
ترا چاند تیرا سورج، توہی خالق جہاں ہے

تری شان بے نیازی، تری ذات بے مثالی
توہی رب انس وجاں ہے، تو خدائے کن فکاں ہے

تو غنی ہر ایک شے سے، مرا عجزہر قدم ہے
میں ہوں بندہ ایک تیرا، توخدائے بندگاں ہے

نہیں دوسرا جہاں میں، مرا کوئی اور شاہا
ترے در کے ماسوا اب، کوئی دوسرا کہاں ہے

تو عزیز ہے میں عاجز، تو کریم ہے میں عاصی
مجھے بخش دے خدایا، مری ہر خطاعیاں ہے

Related posts

کیسی تیری شان، اے ربِّ رحمان

Paigam Madre Watan

’حمد خدائے عزوجل‘

Paigam Madre Watan

’ہے تو ہی فقط سہارا‘

Paigam Madre Watan

Leave a Comment