Delhi دہلی

مرکزی بی جے پی حکومت کچی بستیوں کو مسمار کرنا اور غریبوں کو بے گھر کرنا چاہتی ہے: AAP

جب تک عام آدمی پارٹی اور وزیر اعلی اروند کیجریوال ہیں، دہلی میں کسی کچی بستی کو گرانے نہیں دیا جائے گا: دلیپ پانڈے


نئی دہلی، (پی ایم ڈبلیو نیوز)عام آدمی پارٹی نے بدھ کو وزیر پور انڈسٹریل ایریا میں واقع کچی آبادیوں میں رہنے والے لوگوں میں "گھر بچاؤ – بی جے پی کو ہٹاؤ” مہم کے تحت بیداری پیدا کی۔ آپ کے ممبران اسمبلی دلیپ پانڈے اور راجیش گپتا نے یہاں کی کچی آبادیوں میں رہنے والے لوگوں سے ملاقات کی اور انہیں مرکز کی بی جے پی حکومت کی سازشوں کے بارے میں آگاہ کیا۔ ایم ایل اے دلیپ پانڈے نے کہا کہ مرکزی حکومت کچی بستیوں کو گرا کر غریبوں کو بے گھر کرنا چاہتی ہے۔ مرکزی حکومت نے دہلی میں کچی بستیوں کو گرانے کا حکم جاری کیا ہے۔ لیکن جب تک عام آدمی پارٹی اور وزیر اعلی اروند کیجریوال ہیں، ان کی کچی آبادیوں کو گرانے کی اجازت نہیں دی جائے گی۔ آپ ایم ایل اے دلیپ پانڈے نے کہا کہ بی جے پی انتخابات سے پہلے وعدہ کرتی ہے کہ جہاں بھی کچی بستیاں ہیں وہ گھر فراہم کرے گی اور جیسے ہی انتخابات ختم ہوتے ہیں وہ کچی آبادیوں کے پیچھے پڑ جاتی ہے۔ بی جے پی جس نے انتخابات سے قبل کالکاجی اسمبلی میں کچی بستیوں کے بجائے مکانات دینے کا وعدہ کیا تھا، انتخابات کے بعد ہزاروں لوگوں کو بے گھر کرکے ان کے سروں سے چھت چھین لی ہے۔ عام آدمی پارٹی کے سینئر لیڈر اور ایم ایل اے دلیپ پانڈے نے کہا کہ حال ہی میں وزیر اعظم نریندر مودی کے سکریٹری نے مرکز اور دہلی کے تمام محکموں کے ساتھ میٹنگ کی۔ انہوں نے ریلوے، ڈی ڈی اے، ایم سی ڈی اور ایل این ڈی او کو فون کیا اور ہدایت دی کہ اب دہلی کے اندر کچی آبادیوں کو اجازت نہیں دی جائے گی۔ بی جے پی الیکشن سے پہلیکچی بستیاں بنانے کا نعرہ دیتے ہوئے الیکشن کے بعد اس وعدے کو بھول جاتی ہے اور کچی آبادیوں کو گرانے کی کوششیں شروع کر دیتی ہے۔ بی جے پی نے تغلق آباد میں بھاری پولیس فورس تعینات کی اور لاکھوں لوگوں کو بے گھر کر دیا۔صفدرجنگ ریلوے کے آس پاس کی کچی آبادیوں کو ہٹانے کی کوششیں بھی شروع کر دی گئیں۔ عام آدمی پارٹی کی مداخلت بعد میں ان کچی آبادیوں کو مسمار ہونے سے بچا لیا گیا۔ بی جے پی کچی آبادیوں سے نفرت کرتی ہے۔ مودی سرکار کو کچی آبادیوں میں رہنے والوں سے شرم آتی ہے۔ جب G-20 کانفرنس ہوئی تو دہلی کی کچی بستیاں چھائی ہوئی تھیں۔ دہلی میں اس وقت شدید سردی ہے اور اس کڑی سردی میں غریب لوگ اپنی چھت کھو رہے ہیں۔اسے چھیننے کی سازش کی جا رہی ہے۔ خدا سر پر چھت اور پیٹ میں کھانا دیتا ہے۔ ایسے میں کسی بھی حکومت کو لوگوں کے گھر چھیننے کا کوئی حق نہیں ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ ہم کچی بستیوں میں رہنے والے لوگوں کو یقین دلانا چاہتے ہیں کہ دہلی حکومت اور وزیر اعلی اروند کیجریوال ان کی کچی آبادیوں کو بچانے کے لیے ہر جنگ لڑیں گے۔ اس کے لیے چاہے ہمیں سڑکوں پر لڑنا پڑے، پارلیمنٹ جانا پڑے یا عدالت کا دروازہ کھٹکھٹانا پڑے، ہم ان کچی بستیوں کو اجاڑنے اور ٹوٹنے نہیں دیں گے۔ ہم نے نہ پہلے بھی کچی آبادیوں کو گرانے نہیں دیا اور نہ آئندہ گرانے دیں گے، یہ ہمارا وعدہ ہے۔ ہم کچی آبادیوں میں رہنے والوں کے ساتھ کھڑے ہیں۔ مودی حکومت جانتی ہے کہ دہلی حکومت نے کچی آبادیوں کے لوگوں کی زندگی آسان کر دی ہے۔ ان کو مہنگائی سے بچانے کے لیے ہم انہیں مفت بجلی، مفت پانی دیں گے۔دیگر مفت خدمات فراہم کرنے سمیت۔ بی جے پی غریبوں کو دی جارہی مفت خدمات سے پریشان ہے۔ بی جے پی جانتی ہے کہ اروند کیجریوال دہلی کے لوگوں کے دلوں میں بسے ہوئے ہیں اور اروند کیجریوال کو لوگوں کے دلوں سے نکالنا ناممکن ہے۔ اس لیے ان لوگوں سے بدلہ لینے کے لیے بی جے پی انھیں بے گھر کرنا چاہتی ہے۔سیاست کی سطح اتنی نہیں گرنی چاہیے کہ آپ اپنی شکست کا بدلہ کچی آبادیوں کے لوگوں کو بے گھر کر کے لیں۔ ہم دہلی کی ان تمام کچی بستیوں کا معائنہ کرنے جا رہے ہیں جن کے لیے مرکزی حکومت کی طرف سے انہدام کے نوٹس دیے جا رہے ہیں۔ ہم کسی بھی حال میں دہلی کی کچی آبادیوں کو نہیں گرانے دیں گے.
عام آدمی پارٹی کے ایم ایل اے اور ریاستی نائب صدر راجیش گپتا نے کہا کہ یہ لوگ گزشتہ 30 سالوں سے یہاں کی کچی بستیوں میں رہ رہے ہیں۔ جب وزیر پور میں کارخانے بنے تو ان میں کام کرنے والے لوگ یہاں کچی آبادیوں میں رہنے لگے۔ بی جے پی کی طرف سے بار بار جھوٹے وعدے کیے جاتے ہیں کہ ہم کچی آبادیوں کی مدد کریں گے۔وہاں مستقل مکان دیں گے لیکن ایک وعدہ بھی پورا نہیں ہوا۔ اس کے علاوہ اب بی جے پی نے ان کچی بستیوں کو گرانے کی ہدایات جاری کی ہیں۔ 2017 میں، دہلی حکومت نے یہاں کی کچی آبادیوں میں رہنے والے لوگوں کے لیے بیت الخلا بنائے، جنہیں بی جے پی نے منہدم کر دیا۔ یہ اتنی حساس حکومت ہے کہ لوگ بیت الخلاء جاتے ہیں۔وہ اسے ضروری نہیں سمجھتے۔ سوچھ بھارت ابھیان کا نعرہ دینے والی مودی حکومت غریبوں کو کھلے میں رفع حاجت کرنے پر مجبور کر رہی ہے۔ یہ بیت الخلا غیر قانونی طور پر نہیں بنائے گئے تھے بلکہ دہلی حکومت نے بنائے تھے۔ایم ایل اے راجیش گپتا نے کہا کہ جب ان بیت الخلاء کو گرایا گیا تو میں نے اس کے خلاف احتجاج کیا۔ مجھے گرفتار کر لیا گیا لیکن میں پیچھے نہیں ہٹا۔میں نے یہاں کے عوام کی آواز اسمبلی میں اٹھائی۔ اس کے بعد مرکزی حکومت کو جھکنا پڑا اور ان غریبوں کے لیے قریب ہی بیت الخلا بنانے کا اعلان کیا۔ پہلے مرکزی حکومت نے ان غریبوں کے بیت الخلاء کو توڑا، اب انہیں بے گھر کرنا چاہتی ہے۔ بی جے پی جانتی ہے کہ کچی آبادیوں میں رہنے والے تمام لوگ عام آدمی پارٹی کو ووٹ دیتے ہیں۔ وہ اروند کیجریوال کو پسند کرتے ہیں۔ اس لیے بی جے پی اب انہیں یہاں سے ہٹانا چاہتی ہے۔2015 میں جب مرکز نے کچی آبادیوں کو مسمار کرنا شروع کیا۔جب حکم جاری ہوا تو میں نے اس وقت اروند کیجریوال سے بات کی اور دہلی حکومت نے قانون بنایا کہ 2015 سے پہلے کی کچی بستیوں کو کوئی ہاتھ نہیں لگائے گا۔ ان کچی آبادیوں کو کسی صورت گرایا نہیں جائے گا۔ کچی آبادیوں کو ہٹانے سے پہلے انہیں اسی جگہ پر مستقل مکان دیا جائے گا، تب ہی کچی آبادیوں کو ہٹایا جا سکے گا۔

Related posts

دہلی کے بعد اب آپ حکومت نے پنجاب میں بھی چیف منسٹر یاترا اسکیم شروع کی

Paigam Madre Watan

بی جے پی چاہے جتنے بھی لیڈر گرفتار کر لے، اس سے میگا الیکٹورل بانڈ گھوٹالے کی حقیقت نہیں چھپے گی: گوپال رائے

Paigam Madre Watan

انڈین یونین مسلم لیگ دہلی میں’’ انڈیا‘‘اتحاد کی حمایت کرے گی

Paigam Madre Watan

Leave a Comment

türkiye nin en iyi reklam ajansları türkiye nin en iyi ajansları istanbul un en iyi reklam ajansları türkiye nin en ünlü reklam ajansları türkiyenin en büyük reklam ajansları istanbul daki reklam ajansları türkiye nin en büyük reklam ajansları türkiye reklam ajansları en büyük ajanslar