Delhi دہلی

عالمہ ڈاکٹر نوہیرا شیخ کی ایک اور قانونی فتح

سپریم کورٹ نے ہیرا گروپ کیخلاف ای ڈی کی درخواست مسترد کر دی
قانونی لڑائیوں میں سی ای او کی دیانتداری اور شفافیت پر عدالت عالیہ نے تعریفی الفاظ ادا کئے


نئی دہلی (نیوز ریلیز: مطیع الرحمن عزیز) عدالت عظمیٰ نے اپنی عدالتی صوابدید کے ساتھ انفورسمنٹ ڈائریکٹوریٹ (ای ڈی) کی جانب سے دی گئی پرجوش درخواست کو یکسر مسترد کر دیا۔ جس میں ای ڈی کی جانب سے معزز سی ای او اور منیجنگ ڈائریکٹر ہیرا گروپ آف کمپنیز عالمہ ڈاکٹر نوہیرا شیخ کو دی گئی ضمانت کو منسوخ کرنے کی درخواست کی گئی تھی۔ ہیرا گروپ آف کمپنیز کا حیدرآباد میں میٹرو پولیٹن سیشن جج کی عدالت کے ذریعہ دیا گیا یہ گہرا فیصلہ قانونی پیچیدگیوں کی باریک بینی اور مناسب عمل کی بنیادی اہمیت کو واضح کرتا ہے۔ قانونی حکمتوں کے دائرے میں ای ڈی نے ضابطہ فوجداری کی دفعہ 439 (2) کی دفعات کا استعمال کرتے ہوئے 18 جولائی 2019 کو عالمہ ڈاکٹر نوہیرا شیخ کو دی گئی ضمانت کو کالعدم قرار دینے کے اختیار سے استدعا کی۔ ان کی دلیل کا مرکز ضمانت کی مقررہ شرائط کے ساتھ ان کی مبینہ عدم تعمیل کے الزامات پر تھا۔ خاص طور پر مالی بے ضابطگی اور فنڈز کی مبینہ طور پر لانڈرنگ کے الزامات کی تحقیقات جاری رکھنے کے لیے حیدرآباد میں ای ڈی کے سامنے پیش ہونے میں ان کی مبینہ غفلت۔ تاہم انصاف کے پیمانے، نازک طور پر متوازن نے ED کی درخواست کو غیر ضروری سمجھا۔ اس طرح اس کی برخاستگی کا نتیجہ نکلا۔ عدالت نے باریک بینی سے جانچ کرتے ہوئے فیصلہ دیا کہ ای ڈی کی اگست میں موجودگی سے پہلے عالمہ ڈاکٹر نوہیرا شیخ کی غیر حاضری ان کی ضمانت کی شرائط کی کھلی خلاف ورزی کے مترادف نہیں ہے۔ بلکہ یہ معلوم ہوا کہ دہلی میں انصاف کے گلیاروں میں خاص طور پر سپریم کورٹ کے سامنے ساتھ ساتھ قانونی ذمہ داریوں کی وجہ سے اس کی عدم پیشی ضروری تھی۔ کمرہ عدالت کے مقدس ہالوں کے اندر یہ بات سامنے آئی کہ حیدرآباد میں ای ڈی کے سامنے عالمہ ڈاکٹر نوہیرا شیخ کی واضح غیر حاضری بے ضابطگی کی کارروائی نہیں تھی، بلکہ دہلی میں ان کی ناگزیر موجودگی کی وجہ سے ایک لازمی امر تھا۔ جہاں ان کی قانونی ذمہ داریوں نے ان کی غیر متزلزل توجہ کا مطالبہ کیا تھا۔ عدالت نے ان کے حالات کی نزاکت سے آگاہ کرتے ہوئے ان کی عدم حاضری کے استدلال کو جائز قرار دیا۔ اس طرح ان کی ضمانت کی منسوخی کے لیے کسی بھی ضرورت کو روک دیاگیا۔
عدالت کے دانشمندانہ فیصلے کے جواب میںعالمہ ڈاکٹر نوہیرا شیخ نے پرعزم ثابت قدمی کے ساتھ اپنی گہری راحت کا اظہار کیا۔ غیرمتزلزل بے گناہی کے اپنے موقف کو زور دار طریقے سے دہراتے ہوئے انہوں نے قانونی عمل کے تمام پہلووں کے ساتھ تعاون کرنے کے لیے اپنے اٹل عزم کا اظہار کیا۔ میرا ضمیر صاف ہے، اور میں سچائی کی تقدس اور اپنے یقین پر ثابت قدم ہوں۔” انہوں نے عزم کے ساتھ اعلان کیا۔ مزید برآں انہوں نے عدالتی نظام کی خوبیوں کو سراہنے کے موقع سے فائدہ اٹھاتے ہوئے، انتہائی یکسوئی کے ساتھ انصاف فراہم کرنے کی اس کی صلاحیت کی تعریف کی۔ عدالت کا فیصلہ قانونی درستگی کی زبان میں واضح طور پر ای ڈی کی درخواست میں میرٹ کی کمی کو ظاہر کرتا ہے۔ اس طرح اسے برخاست کرنے کا خطرہ ہے۔ عدالت کی تاریخ کے اندر یہ حکم نامہ ثبوت کی اولین حیثیت اور مجرم ثابت ہونے تک بے گناہی کے ناقابلِ تنسیخ اصول کا ثبوت ہے۔ ہیرا گروپ اور عالمہ ڈاکٹر نوہیرا شیخ کی بصیرت کے تحت اپنے کاروباری معاملات میں دیانتداری اور شفافیت کی اخلاقیات کی حمایت کرتا ہے۔ یہ کمپنی پر واجب ہے کہ وہ اپنے معزز سرمایہ کاروں کے مفادات اور اعتماد کا تحفظ کرے۔ عالمہ ڈاکٹر نوہیرا شیخ نے اپنے شاندار عزم کے ساتھ واضح کیا کہ اہم اثاثوں کی پیشکش کا فیصلہ کمپنی کے اسٹیک ہولڈرز کے اعتماد اور اعتقاد کو برقرار رکھنے کے غیر متزلزل عزم کی علامت ہے۔ ہمارے انٹرپرائز کی بنیاد ہمارے سرمایہ کاروں کے غیر متزلزل اعتماد میں ہے،” انہوں نے سنجیدگی سے اعلان کیا۔ "ان کا ایمان ہمارا سب سے قیمتی اثاثہ ہے، جسے ہم اپنے آنے والوں کے لیے پالنے اور برقرار رکھنے کا عہد کرتے ہیں۔ نوہیرا شیخ اپنی کمپنی کے وقار اور اپنے اسٹیک ہولڈرز کے اعتماد کی حفاظت کیلئے ثابت قدمی کے عزم کی مثال دیتے ہوئے استقامت اور لچک کے نمونے کے طور پر کھڑی ہیں۔ انصاف کے تقدس پر اٹل یقین کے ساتھ ان کی کہانی سچائی کی لازوال جستجو اور مصیبت کے وقت لچک کے ناقابل تسخیر جذبے کی مظہر ہے۔ جیسا کہ قانونی معاملہ سامنے آتا ہے، یہ ہمیں ان ناقابل تغیر اصولوں پر غور کرنے کی ضرورت ہے جو انصاف کی عمارت کی بنیاد رکھتے ہیں۔ قانونی جانچ پڑتال کے مصداق میں سچائی حتمی ثالث کے طور پر ابھرتی ہے۔ وقت اور حالات کے نشیب و فراز سے بالاتر ہوتی ہے۔ عالمہ ڈاکٹر نوہیرا شیخ کی بریت سچائی کے لیے پختہ عزم اور انصاف کیلئے اعلیٰ جدوجہد کا ثبوت ہے۔
خلاصہ الکلام کے طور پر بات کریں تو عدالت عظمیٰ کی طرف سے انفورسمنٹ ڈائریکٹوریٹ کی پٹیشن کی زبردست برخاستگی نہ صرف عالمہ ڈاکٹر نوہیرا شیخ کی فتح کی علامت ہے بلکہ قانونی نظام کی دیانتداری اور غیر جانبداری کا اعادہ بھی ہے۔ عالمہ ڈاکٹر نوہیرا شیخ کی شفافیت کے لئے عزم اور انصاف کے اصولوں کو برقرار رکھنے میں ان کے ثابت قدمی نے نہ صرف ان کی کمپنی کے وقار کو محفوظ بنایا ہے بلکہ مشکلات کے باوجود سچائی کی مستقل جستجو پر بھی زور دیا ہے۔ جیسے جیسے قانونی کہانی سامنے آتی ہے، ان کی ضمانت انصاف کے لیے پائیدار جدوجہد اور قانون کے دائرے میں لچک کے ناقابل تسخیر جذبے کی ایک پرجوش یاد دہانی کے طور پر کام کرتی ہے۔

Related posts

بلڈوزر سیاست بند کرو۔ ایس ڈی پی آئی کا مطالبہ

Paigam Madre Watan

دہلی اردو اکادمی کے اشتراک سے اقراء فاؤنڈیشن کے زیر اہتمام یک روزہ ریسرچ سیمنار کا انعقاد

Paigam Madre Watan

بزم دانشجویان فارسی کے زیرِ اہتمام  محفل نقشہ ہای رنگ رنگ کا اِنعقاد 

Paigam Madre Watan

Leave a Comment

türkiye nin en iyi reklam ajansları türkiye nin en iyi ajansları istanbul un en iyi reklam ajansları türkiye nin en ünlü reklam ajansları türkiyenin en büyük reklam ajansları istanbul daki reklam ajansları türkiye nin en büyük reklam ajansları türkiye reklam ajansları en büyük ajanslar