Delhi دہلی

نیشنل آرگنائزیشن کے جنرل سکریٹری ڈاکٹر سندیپ پاٹھک اور نیشنل سکریٹری پنکج گپتا کی صدارت میں ‘میں بھی کیجریوال’ مہم کے سلسلے میں پارٹی ہیڈکوارٹر میں بڑی میٹنگ کی

تنظیم کے جنرل سکریٹری ڈاکٹر سندیپ پاٹھک نے AAP کارکنوں سے کہا – ‘میں بھی کیجریوال’ مہم کے تحت دہلی میں ایک بھی گھر چھٹنا نہیں چاہیے


نئی دہلی(پی ایم ڈبلیو نیوز)دہلی میں عام آدمی پارٹی کی طرف سے چلائی جا رہی ‘میں بھی کیجریوال’ دستخطی مہم کے سلسلے میں بدھ کو شمال مشرقی لوک سبھا اور چاندنی چوک لوک سبھا سیٹوں کے عہدیداروں اور کارکنوں کی ایک اہم میٹنگ پارٹی ہیڈکوارٹر میں بلائی گئی۔ قومی تنظیم کے جنرل سکریٹری اور راجیہ سبھا ممبر پارلیمنٹ ڈاکٹر سندیپ پاٹھک اورقومی سکریٹری پنکج گپتا نے میٹنگ کی صدارت کی۔ ریاستی نائب صدر اور ایم ایل اے رتوراج جھا، ریاستی نائب صدر اور ایم ایل اے راجیش گپتا، ریاستی نائب صدر اور ایم ایل اے کلدیپ کمار اور ریاستی نائب صدر اور ایم ایل اے گلاب سنگھ یادو نے بھی میٹنگ میں شرکت کی۔ قومی تنظیم کے جنرل سکریٹری ڈاکٹر سندیپ پاٹھک نے کہا کہ ہم سب لوگوں کو مل کر کام کرنا ہوگا۔ اس مہم کے تحت دہلی کا ایک بھی گھر چھٹنا نہیں چاہیے۔ ہمیں ہر گھر میں جا کر لوگوں کی رائے اکھٹی کرنی ہے۔ ہمیں دہلی کے لوگوں کو مودی حکومت کی آمریت کے بارے میں بتانا ہے۔ ہمیں لوگوں کو بتانا ہے کہ منیش سسودیا، ستیندر جین اور سنجے سنگھ کو جیل میں ڈالنے کے بعد اب مودی حکومت دہلی کے بیٹے اروند کیجریوال کو جیل میں ڈالنے کی سازش کر رہی ہے۔قومی تنظیم کے جنرل سکریٹری ڈاکٹر سندیپ پاٹھک نے مزید کہا کہ ہمیں عوام کو بتانا ہے کہ مودی حکومت کس طرح عام آدمی پارٹی کو تباہ کرنے کی سازش کر رہی ہے۔ مودی حکومت کی طرف سے کی جا رہی کارروائی سے اب یہ واضح ہو گیا ہے کہ وہ دہلی کے وزیر اعلی اروند کیجریوال کو جیل میں ڈالنا چاہتے ہیں۔ جیل میں ڈالنے کے پیچھے واحد مقصد پارٹی کو توڑنا ہے۔ کیجریوال جی کو جیل میں ڈالنے کے فوراً بعد بی جے پی ہماری پارٹی کو توڑنے کا عمل شروع کر دے گی۔ پارٹی بنانا ایک چیز ہے، پارٹی چلانا دوسری بات ہے لیکن پارٹی کو زندہ رکھنا سب سے بڑی چیز ہے۔ مودی حکومت عام آدمی پارٹی کو توڑنے کا منصوبہ بنا رہی ہے۔ لیکن ہمیں پارٹی کو بچانا ہے۔ ہمیں مودی سرکار کی سازش کو ناکام بنانے کے لیے ثابت قدم رہنا ہوگا۔ ہمیں کسی بھی حالت میں پیچھے نہیں ہٹنا چاہیے۔ میں بھی کیجریوال مہم کے تحت دہلی کا ایک بھی گھر چھٹنا نہیں چاہیے۔میٹنگ میں موجود عام آدمی پارٹی کے قومی سکریٹری پنکج گپتا نے کہا کہ پچھلے کئی مہینوں سے بی جے پی عام آدمی پارٹی کے اہم لیڈروں کے خلاف جنگ چھیڑ رہی ہے۔ بی جے پی نے عام آدمی پارٹی کے لیڈروں کو جیل میں ڈالنے کی مہم شروع کر دی ہے۔ اس مہم کے لیے تمام سرکاری اداروں کو استعمال کیا جا رہا ہے۔ انہیں منیش سسودیا جی، ستیندر جین جی اور سنجے سنگھ جی کے خلاف ایک بھی ثبوت نہیں ملا ہے لیکن پھر بھی وہ ضمانت حاصل کرنے میں کامیاب نہیں ہو سکے ہیں۔ منیش سسودیا اور سنجے سنگھ کو مہینوں سے جیل میں رکھا گیا ہے۔ اس سب کے باوجود عام آدمی پارٹی نہیں ٹوٹی، پارٹی نے دہلی میں انتخابی مہم جاری رکھی اورپنجاب میں اچھا کام ہو رہا ہے، عام آدمی پارٹی کی طرف سے ہو رہے کاموں کا لوگ فائدہ اٹھا رہے ہیں، اس لیے اب مرکزی حکومت نے عام آدمی پارٹی کے قومی کنوینر اور دہلی کے وزیر اعلی اروند کیجریوال کو نشانہ بنانا شروع کر دیا ہے۔پنکج گپتا نے مزید کہا کہ اب اروند کیجریوال جی کو ای ڈی اور سی بی آئی کے ذریعے کسی نہ کسی بہانے گرفتار کرنے کی کوششیں کی جا رہی ہیں۔ انہیں سلاخوں کے پیچھے ڈالا جائے۔ اسی وجہ سے اسے سمن بھیجا گیا۔ عام آدمی پارٹی کے کارکن کبھی نہیں جھکے ہیں اور نہ کبھی جھکیں گے۔ اس مہم کے حوالے سے ہم بیچ میں جا کر ان سے پوچھا کہ اگر بی جے پی اروند کیجریوال جی کو جیل میں ڈالنے میں کامیاب ہو جاتی ہے تو ایسے ماحول میں کیا اروند کیجریوال جی کو استعفیٰ دینا چاہئے یا جیل سے حکومت چلانا چاہئے؟عام آدمی پارٹی کے کارکن گھر گھر جا کر لوگوں کی رائے لے رہے ہیں۔ آج ہم نے دو لوک سبھا کے عہدیداروں اور کارکنوں کے ساتھ میٹنگ کی۔ ہر ایک نے اپنے تجربات ہمارے ساتھ شیئر کئے۔عام آدمی پارٹی کے ریاستی نائب صدر اور ایم ایل اے ریتوراج جھا نے کہا کہ ہمیں دہلی کے لوگوں کی طرف سے ‘میں بھی کیجریوال’ مہم کے لیے توقع سے زیادہ حمایت مل رہی ہے۔ دہلی کے لوگ کہتے ہیں کہ نریندر مودی جی کو ملک میں اگر کسی سے ڈر لگتا ہے تو وہ کیجریوال جی ہیں۔ اب ان کا خوف بہت بڑھ گیا ہے۔بتایا جاتا ہے کہ فرضی کیس بنا کر سب سے پہلے عام آدمی پارٹی کے لیڈروں کو نشانہ بنایا گیا۔ اب وہ وزیر اعلیٰ کو نشانہ بنا رہے ہیں۔ سپریم کورٹ ثبوت مانگ رہی ہے لیکن ان کے پاس کوئی ثبوت نہیں۔ دہلی کے لوگوں کا کہنا ہے کہ اگر اروند کیجریوال مودی جی کو جیل میں ڈالیں گے تو انہیں جیل سے ہی حکومت چلانی پڑے گی۔آج ای ڈی اور سی بی آئی حکومت کے طوطے بن چکے ہیں۔ آج ای ڈی اور سی بی آئی حکومت کی کٹھ پتلی بن کر کام کر رہے ہیں۔ سرکاری اداروں کا ایسا غلط استعمال دنیا میں کہیں نہیں دیکھا گیا۔ جس طرح دہلی کے لوگوں نے بی جے پی کو چار بار اکھاڑ پھینکا، اسی طرح آئندہ لوک سبھا انتخابات میں بھی۔دہلی کے عوام عام آدمی پارٹی کو پانچویں بار جتا کر دہلی سے بی جے پی کو بے دخل کر دیں گے۔ ہم اس مہم کو چلانے کے لیے جتنی محنت کریں گے، اتنی ہی زیادہ کامیابی حاصل کریں گے۔ریاستی نائب صدر اور ایم ایل اے راجیش گپتا نے کہا کہ مودی حکومت بدعنوانی کے خلاف نہیں ہے۔ آج مودی حکومت کی ایجنسیوں کی ایمانداری پر سوال اٹھ رہے ہیں۔ اگر ای ڈی اور سی بی آئی نے اپنا کام ایمانداری سے کیا ہوتا تو وجے مالیا ملک کو لوٹ کر لندن میں بیٹھا نہ ہوتا۔ اگر ای ڈی اور سی بی آئی نے ایمانداری سے کام کیا ہوتا تو ملک ہوتا لٹیرے میہول چوکسی، نیرو مودی اور للت مودی بیرون ملک نہ بیٹھے ہوتے۔ آج یہ سب جیل کے اندر ہوتے۔ مودی حکومت سیاسی فائدے کے لیے ای ڈی اور سی بی آئی کا استعمال کر رہی ہے۔ مودی حکومت کی ہدایت پر ای ڈی اور سی بی آئی فرضی کیس درج کرکے عام آدمی پارٹی کے لیڈروں کو جیل میں ڈالنے کا کام کر رہے ہیں۔تاریخ پر نظر ڈالیں تو دنیا میں جتنے بھی تانا شاہ آمر ہیں انہیں عوام نے سبق سکھایا ہے۔ ہرتانا شاہ کو اپنا تخت چھوڑنا پڑا ہے۔ریاستی نائب صدر اور ایم ایل اے کلدیپ کمار نے کہا کہ تمام بدعنوان لیڈر بی جے پی میں شامل ہو کر مزے کر رہے ہیں اور وزیر بنے ہوئے ہیں۔ تمام ایماندار لوگوں کو جیل میں رکھا گیا ہے۔ عام آدمی پارٹی ایک کٹر ایماندار اور کٹر محب وطن پارٹی ہے۔ ہمارے لیڈر دہلی کے لوگوں کے تئیں بے لوث جذبات کے ساتھ خدمت کر رہے ہیں۔ پہلے دہلی کے لوگوں کو پیسے دے کر اپنا کام کروانا پڑتا تھا لیکن آج دہلی کے لوگوں کا کام بغیر کسی تاخیر کے ایمانداری سے ہو رہا ہے۔ ہم لوگوں کی خدمت کرنے سے لطف اندوز ہوتے ہیں۔ اگر منیش سسودیا آج بی جے پی میں شامل ہوتے ہیں تو آپ دیکھیں گے کہ وہ فوراً جیل سے رہا ہو جائیں گے۔ہمیں فخر ہے کہ ہمارے لیڈر اتنے ظلم کے بعد بھی مودی سرکار کے سامنے نہیں جھکے۔ عام آدمی پارٹی کے کارکن پارٹی کی طاقت ہیں، کارکنوں کی محنت کی وجہ سے ہی آج ہم یہاں تک پہنچے ہیں۔ریاستی نائب صدر اور ایم ایل اے گلاب سنگھ یادو نے کہا کہ آج عام آدمی پارٹی اپنے 10 سال کے سفر میں سب سے مشکل دور سے گزر رہی ہے۔ پچھلے 10 سالوں میں ہم پر طرح طرح کے بحران آتے رہے لیکن ہم نے سر نہیں جھکایا۔ اس سب کے باوجود آج ہماری دو ریاستوں میں حکومتیں ہیں۔ دہلی میونسپل کارپوریشن میں ہماری حکومت ہے۔ ہمارے پاس ریاستوں میں ایم ایل اے اور کونسلر بہت ہیں۔ پارٹی کے ہر کارکن کو سلام پیش کرتا ہوں۔ آپ لوگوں نے دن رات محنت کی، سب کچھ پیچھے چھوڑ کر پارٹی کے انقلابی سپاہیوں کے طور پر کام کیا۔ آپ لوگوں کو مستقبل میں بھی اسی طرح محنت کرنی ہے اور پارٹی کو نئی بلندیوں پر لے جانا ہے۔

Related posts

श्रम अधिकारों और आर्थिक विकास में सामंजस्य स्थापित करना एमईपी के पास व्यापक कार्ययोजना है: डॉ. नौहेरा शेख

Paigam Madre Watan

18 جنوری کے انتخابی نتائج ملک کا موڈ پیش کریں گے: راگھو چڈھا

Paigam Madre Watan

عالمہ ڈاکٹر نوہیرا شیخ کی ایک اور قانونی فتح

Paigam Madre Watan

Leave a Comment

türkiye nin en iyi reklam ajansları türkiye nin en iyi ajansları istanbul un en iyi reklam ajansları türkiye nin en ünlü reklam ajansları türkiyenin en büyük reklam ajansları istanbul daki reklam ajansları türkiye nin en büyük reklam ajansları türkiye reklam ajansları en büyük ajanslar